کورونا وائرس: انسٹاگرام کی جانب سے قرنطینہ کرنے والے صارفین کے لیے دلچسپ فیچر

سان فرانسسکو: سماجی رابطے کی فوٹو شیئرنگ ویب سائٹ اور موبائل ایپلیکیشن انسٹاگرام نے کورونا سے بچاؤ کے لیے خود کو قرنطینہ کرنے والے صارفین کے لیے دلچسپ فیچر متعارف کرادیا۔

انسٹاگرام کی جانب سے جاری اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ صارفین کے لیے’کوواچنگ‘  نامی فیچر متعارف کیا گیا جس کے ذریعے وہ اپنے دوستوں کے ساتھ ویڈیو چیٹ کے دوران پوسٹ بھی دیکھ سکتے ہیں۔

کمپنی کے مطابق کال کرنے اور ریسیو کرنے والا صارف ایک دوسرے سے جڑے گا اور دونوں محدود رہیں گے یعنی کوئی تیسرا شخص اُن کی گفتگو میں خلل نہیں ڈال سکے گا۔ انسٹاگرام کی ویڈیو چیٹ کے دوران دائیں جانب ایک فیچر دکھائی دے گا جس پر کلک کرنے کے بعد پوسٹ نمایاں ہوجائیں گی اور پھر صارف اپنے دوست کے ساتھ مل کر ان پر تبصرہ کرسکے گا۔

انسٹاگرام کا کہنا ہے کہ صارف کو کووڈ-19 کے حوالے سے مصدقہ معلومات فراہم کرنے کے لیے کمپنی نے اقدامات کیے مصدقہ معلومات کے ساتھ ایک اسٹیکر بھی شامل کیا گیا ہے جبکہ کمپنی نے اُن اکاؤنٹس کی نشاندہی بھی کرلی ہے جو کرونا وائرس سے متعلق بے بنیاد معلومات پھیلا رہے تھے۔ انسٹاگرام نے ایپ میں عطیات دینے کا اسٹیکر بھی شامل کیا جس کے تحت نجی ادارے کورونا کے خلاف جنگ میں اپنے عطیات عالمی ادارہ صحت کو دے سکتے ہیں۔

علاوہ ازیں کمپنی نے صارفین کو قرنطینہ یا گھروں پر رہنے کی ترغیب دینے کے حوالے سے’گھروں پر قیام کریں‘ کا اسٹیکر متعارف کرادیا ہے جسے شہری ایک دوسرے کو بھیج سکتے ہیں۔پروفیسر پی کوک نے بتایا کہ اس وقت ٹیسٹنگ کٹ آزمائشی مراحل میں ہے جس میں تجزیہ کرکے تصدیق کیا جارہا ہے کہ یہ کام کرے گی یا نہیں تاہم اس ہفتے کے اختتام پر اس کی مکمل معلومات سامنے آجائے گی اس کے بعد یہ پورے انگلینڈ میں دستیاب ہوگی۔ ان کا کہنا تھا کہ کہ ایک بار ہمیں ہر لحاظ سے یقین دہانی کرنے دیں کہ یہ کٹ کتنی کارآمد ثابت ہوسکتی ہے اس کے بعد اسے مارکیٹ میں فراہم کردیا جائےگا یہ ٹیسٹنگ کٹ آن لائن آرڈر کرنے کے بجائے میڈیکل اسٹورز اور اسپتالوں میں بھی دستیاب ہوگی۔

واضح رہے کہ دنیا بھر میں کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث اسپتالوں میں کووڈ-19 کے ٹیسٹ کے لیے کٹس کی قلت سامنے آرہی ہے جس کے باعث فنگر پرک کٹس تیار کی جارہی ہے۔

 

آئی ڈی: 2020/03/26/7019

متعلقہ خبریں

Leave a Comment