لاک ڈاؤن، بجلی اور گیس کے بل 3 ماہ میں ادا کرنے کی مہلت

مشیر خزانہ کا کہنا ہے کہ بجلی اورگیس کے بل فوری طور پر ادا کرنے کی ضرورت نہیں۔ بجلی اور گیس کے بل 3 ماہ میں ادا کیے جاسکیں گے۔

ٹیکس ریفنڈ چیک تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے مشیر خزانہ حفیظ شیخ کا کہنا تھا 200 ارب روپے کی گندم خریدی جا رہی ہے، 100 ارب روپے ریفنڈ کیے جا رہے ہیں، چھوٹے کارخانوں کیلئے 100 ارب روپے رکھے گئے ہیں۔

انہوں نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا کہ لاک ڈاون کی صورتحال کی وجہ سے بجلی اور گیس کے بل فوری طور پر ادا کرنے کی ضرورت نہیں۔ بجلی اور گیس کے بل 3 ماہ میں ادا کیے جاسکیں گے۔

واضح رہے کہ ایف بی آر نے فاسٹر نظام کے تحت 56 ارب روپے کے ریفنڈز منظور کر لئے ہیں۔ فاسٹر نظام کے تحت جولائی 2019 سے اب تک 59 ارب روپے کے ریفنڈ کیسز فائل کئے گئے جن میں سے اب تک  56 ارب کے ریفنڈ کیسز کو باقاعدہ طور پر منظور کیا جا چکا ہے جو کہ فائل شدہ ریفنڈ کیسز کے تقریبا95 فیصد بنتے ہیں۔ صرف مارچ 2020کے مہینہ میں ایف بی آر نے 25 ارب روپے کے ریفنڈز منظور کئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment