کورونا وائرس: زمین کے اندرونی نظام میں تبدیلی لے آیا

دنیا میں تقریبا 4 ملین یعنی آدھی سے زائد آبادی  نے کورونا کے خوف سے خود کو گھروں میں محصور کر دیا ہے۔
تحقیق کے مطابق دنیا بھر میں لاک ڈاؤن کے باعث  آمدورفت کے نظام، کاروبار اور باقی ماندہ انسانی سرگرمیاں تعطل کا شکار ہوئی ہیں اس کے نتیجے میں اس زمینی سیارے کے اندرونی نظام میں مثبت تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں۔
اس سیارے کی حرکت اور سیزمک نوئیز میں واضح کمی دیکھنے میں  آئی جس کی وجہ سے زلزلوں اور آتش فشانی کے عمل بھی کم ہو گئے ہیں۔
سیزمولوجسٹ( ماہر ارتعاش اراضی)  تھومس نے جرنل نیچر میں چھپنے والے  اپنے آرٹیکل میں کہا ہے کووڈ 19 کے عالمی لاک ڈاؤن کی  وجہ سے زمین کے اندرونی شورمیں کمی رونما ہوئی جو سائنسدانوں کے لیے قدرتی آفات کو جانچنے کی صلاحیت میں حائل ہو رہا تھا لیکن اب ان کی پیمائش آسان ہو گئی ہے۔ مگر جو جگہیں زمین کی سطح سے زیادہ قریب ہیں ان میں بہت کم یا یوں کہیں کوئی تبدیلی نظر نہیں آئی۔

یاد رہے دنیا بھر میں اب تک کورونا کے 1 ملین تصدیق شدہ کیسز سامنے آئے ہیں جبکہ وائرس سے 56000 اموات ہو چکی ہیں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment