گوگل کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں عوامی نقل و حرکت میں 70 فیصد کمی آئی

عالمی وبا کورونا وائرس نے تیزی سے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے  جس کے سبب متعدد ممالک نے وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے لاک ڈاؤن اور جزوی کرفیو لگا رکھا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق گوگل نے ایک کمیونٹی موبلیٹی رپورٹ جاری کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ کیسے سماجی دوری اور لاک ڈاؤن نے لوگوں کی نقل و حرکت کو متاثر کیا ہے۔

گوگل نے لاک ڈاؤن کے بعد اسٹیشنز، کام کی جگہوں، تفریحی مقامات اور دیگر جگہوں پر عوامی نقل و حرکت کا جائزہ لیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق لاک ڈاؤن کے باعث پاکستان میں ریٹیل اور تفریحی مقامات میں عوامی نقل و حرکت میں 70 فیصد کمی دیکھنے میں آئی ہے جس میں ریسٹورینٹس، کیفے، شاپنگ سینٹرز، سنیما، لائبریری اور دیگر مقامات شامل ہیں۔

دوسری جانب سپر مارکیٹس اور میڈیکل اسٹورز میں عوام کی نقل و حرکت میں 55 فیصد کمی جب کہ پارکس میں 45 فیصد کمی دیکھنےمیں آئی ہے۔

گوگل کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق لوگ پہلے کی نسبت 18 فیصد زیادہ گھروں میں رہ رہے ہیں جب کہ پبلک ٹرانسپورٹ میں بھی عوام کی نقل و حرکت میں 62 فیصد کمی دیکھنے میں آئی ہے۔

رپورٹ میں مقامات پر عوام کی بالکل صحیح تعداد نہیں بتائی گئی ہے کیوں کہ موصول ہونے والا ڈیٹا گوگل میپ کے مطابق ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment