ٹویٹر کے بانی جیک ڈورسی کا ایک ارب ڈالر مالیت کا عطیہ کرنے کا اعلان

جیک ڈورسی کی جانب سے عطیہ کی جانے والی رقم کورونا وائرس سے پیدا ہونے والی صورت حال سے نمٹنے کے لیے استعمال ہو گی۔


فرانس: مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ’’ٹویٹر‘‘ کے شریک بانی اور چیف ایگزیکٹو جیک ڈورسی نے کرونا وائرس سے پیدا ہونے والی صورتحال سے نمٹنے کے لیے ایک بلین ڈالر عطیہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے کسی بھی شخص کی ذاتی حیثیت میں دی گئی یہ سب سے بڑی امدادی رقم ہے۔

جیک ڈورسی ٹوئٹر کے علاوہ ایک اور ڈیجیٹل کمپنی ’سکوئیر‘ کے بھی چیف ایگزیکٹو ہیں۔ انہوں نے فلاحی کاموں کے لیے فاؤنڈیشن کے علاوہ ’سٹارٹ سمال‘ کے نام سے ایک فنڈ بنا رکھا ہے۔ سٹارٹ سمال کا مقصد ان فلاحی کاموں کی امداد کرنا ہے جو ان کی فاؤنڈیشن کے ذریعے نہیں کیے جا سکتے۔

فرانسیسی نیوز ایجنسی’’اے ایف پی‘‘ کے مطابق جیک ڈورسی اپنی مجموعی دولت کا 28 فیصد ’سٹارٹ سمال‘ کے نام وقف کر چکے ہیں۔ٹویٹر بانی جیک ڈورسی نے ایک بلین ڈالر کی مدد کا اعلان ٹویٹ کے ذریعے کرتے ہوئے کہا کہ کہ اس وقت لوگوں کی مدد کرنے کی سب سے زیادہ ضرورت ہے اوروہ اپنی زندگی میں ہی اس کے اثرات دیکھنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے ایک اور ٹویٹ کیا کہ شاید ان کے اس اقدام سے دوسروں کی بھی حوصلہ افزائی ہو اور وہ بھی اپنا حصہ لازمی ڈالیں۔ ’زندگی بہت چھوٹی ہے، تو کیوں نہ وہ سب کریں جو ہم کر سکتے ہیں۔‘ ڈورسی کا کہنا ہے کہ وبا کے اختتام کے بعد اس فنڈ کے ذریعے بچیوں کی پڑھائی اور صحت کو بہتر بنایا جا سکے گا، اور دنیا بھر میں لوگوں کی بنیادی انکم کو بہتر بنانے کی کوششوں پر لگایا جا سکے گا۔

انہوں نے کہا کہ ’سمارٹ سمال‘ کے ذریعے وہ ایک ہزار ڈالر ’امریکی فوڈ فنڈ‘ میں عطیہ کر چکے ہیں جو اداکار لیونارڈو ڈیکیپریو اور سٹیو جاب کی اہلیہ نے شروع کیا تھا۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.