کورونا متاثرین کی تعداد راوں ماہ کے آخر تک بڑھ سکتی ہے،وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم ہاوس میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہر 100میں سےایک یادو افراداس بیماری سےمرسکتےہیں،کورونا سےمتاثرہ 4سے5فیصدافرادکوصرف اسپتالوں میں جانےکی ضرورت ہوتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سب سےدرخواست کرتاہوں،خداکاواستہ غلط فہمی میں نہ پڑیں، پاکستان میں لوگ لاپرواہی کرنا شروع کر دیتےہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اپریل کےآخرتک کورونا متاثرین کی تعداد بڑھ سکتی ہے،تین ہفتے لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا تھا،جب ہم لاک ڈاؤن کریں گےتوغریب ترین طبقےپرکیا اثرات پڑیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں 5 کروڑ افرادغربت کی لکیر سےنیچےہیں، ہم نےاسکول ،کالجز،جامعات کو بند کر دیا تھا، کورونا کیسزکی تعداد بڑھی توہمار ے پاس اتنےوینٹی لیٹرزنہیں ہیں کہ انکا علاج ہو سکے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ دیہات میں ایگری کلچر سیکٹر پرکوئی لاک ڈاوَن نہیں ہوگا جبکہ  14 اپریل سے کنسٹرکشن سیکٹر کو کھولا جا رہا ہے۔ان نے کہا کہ ہر ملک میں کورونا وائرس کاپھیلاؤ مختلف ہے،کسی نوجوان کوبیماری لگی تو اس کےگھرمیں موجود بزرگوں کوخطرہ ہوسکتا ہے

متعلقہ خبریں

Leave a Comment