عالمی وباء: لوگ اپنے پیاروں کی لاشوں سے لا تعلق

ایکواڈور:عالمی وباء کورونا وائرس نے دنیا بھر کے لوگوں میں اتنا خوف پیدا کر رکھا ہے کہ وہ اپنے ہی مرنے والے پیاروں کی لاشوں کو اٹھانے اور دفنانے یا جلانے سے بھی گریز کر رہے ہیں۔

سی این این کی رپورٹ کے مطابق رواں ماہ ایکواڈور کے ساحلی شہر گویاکل سے کچھ ایسی ویڈیوز اور تصاویر منظر عام پر آئیں جن میں واضح طور پر دیکھا جا سکتا تھا کہ کورونا کی وجہ سے مبینہ طور پر مر جانے والے افراد کی لاشیں گلیوں میں پڑی ہیں۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ وہ 5 دنوں کی پرانی لاشیں تھیں اور ان سے بدبو آنے لگی مگر انہیں کوئی اٹھانے والا نہیں تھا۔ بعد ازاں ایسی لاشوں کو اٹھانے اور انہیں دفنانے یا جلانے کے لیے شہری انتظامیہ کا مردہ خانوں پر مامور عملہ اور پولیس سامنے آئی اور انہوں نے ایسی لاشوں کو گلیوں اور گھروں سے ہٹایا۔

گویاکل کی پولیس و مردہ خانوں کے عہدیداروں نے بتایا کہ انہوں نے اپریل کے پہلے ہفتے سے اب تک گلیوں اور گھروں کے باہر پڑی 800 لاشیں اٹھا کر ان کی آخری رسومات ادا کرنے کے بعد انہیں دفنایا یا جلا دیا۔

حکومت کی جانب سے لاشوں کو اٹھانے اور انہیں دفنانے یا جلانے کے لیے بنائی گئی خصوصی ٹیم کے سربراہ جورگی ویٹڈ نے بتایا کہ اب تک شہر سے 800 لاشیں برآمد کی گئی ہیں۔

واضح رہے کہ ایکواڈور کی حکومت نے کورونا وائرس سے 13 اپریل کی دوپہر تک صرف 330 افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی تھی جب کہ گویاکل کی گلیوں اور گھروں کے باہر سے اٹھائی گئی لاشیں الگ ہیں۔ ایکواڈور میں 13 اپریل کی دوپہر تک کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد ساڑھے 7 ہزار تک جا پہنچی تھی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment