پی ایم ڈی سی کا اہم ریکارڈ ، لیپ ٹاپس اور ہارڈ ڈسک غائب

اسلام آباد:پی ایم ڈی سی کی جانب سے ان کے اہم ریکارڈ ، لیپ ٹاپس اور ہارڈ ڈسک غائب ہونے کا انکشاف  ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق رجسٹرار پی ایم ڈی سی حفیظ الدین نے اپنے اہم ریکارڈ ، لیپ ٹاپس اور ہارڈ ڈسک غائب ہونے کی تحریری رپورٹ اسلام آباد ہائیکورٹ میں جمع کرا دی۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے پی ایم ڈی سی کی بحالی کے بعد مختلف ڈیپارٹمنٹس کا ریکارڈ غائب پایا گیا۔

مختلف ڈیپارٹمنٹس کی چابیاں ، تین لیپ ٹاپ ، ہارڈ ڈسک اور وائی فائی ڈیوائس تک غائب ہیں۔ پی ایم ڈی سی کی ملکیت والی پانچ گاڑیاں غائب ہیں اور جو گاڑیاں موجود ہیں ان کی چابیاں موجود نہیں۔

پی ایم ڈی سی کی ملکیت والے تین گھروں کی چابیاں بھی ابھی تک واپس نہیں کی گئیں۔ کالعدم قرار دیئے گئے پاکستان میڈیکل کمیشن کے سیکرٹری اور وزارت صحت کو صورتحال سے آگاہ کیا گیا۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ وزارت صحت سے ابھی تک کوئی جواب موصول نہیں ہوا یاد دہانی کا خط بھی بھیجا جا چکا۔

کالعدم پاکستان میڈیکل کمیشن کے سیکرٹری ڈاکٹر ارسلان حیدر سے بھی رابطہ کیا گیا۔ ڈاکٹر ارسلان حیدر نے خود آنے سے صاف انکار کر دیا، کہا وزارت صحت سے ہی بات کریں، پی ایم ڈی سی بحالی کے بعد ایک ہزار رجسٹریشن سرٹیفکیٹس جاری کر چکی ہے۔ کُل 6500 زیر التوا رجسٹریشن کیسز کی نشاندہی کی جا چکی ہے۔ پی ایم ڈی سی نے کورونا کے باعث ابھی صرف 45 ملازمین کے محدود سٹاف کیساتھ کام شروع کیا ہے۔

علاوۃ ازیں ڈاکٹروں کی سہولت کے لئے کراچی ، لاہور سمیت تمام علاقائی دفاتر بھی فعال بنا دیئے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment