رواں سال بجٹ پیش ہو گا یا نہیں، اہم خبرآ گئی


لاہور: وفاقی حکومت کی جانب سےتاحال پنجاب کوبجٹ کےحصے بارے آگاہ نہیں کیا جا سکا ہے۔

اپریل میں پنجاب میں ہرسال نئےبجٹ کی تیاری شروع کردی جاتی ہے۔ اس دوران مختلف سٹیک ہولڈرزسےمشاورت کے بعد مئی میں حتمی شکل دے دی جاتی ہےلیکن ذرائع کا کہنا ہےکہ اس بار مالی سال 2020/2021 کے لیے بجٹ کی تیاری التواء کا شکار ہے،کیونکہ وفاقی حکومت کی جانب سے تاحال پنجاب کو اس کے حصےسے آگاہ نہیں کیا گیا۔

کورونا وائرس کے باعث پنجاب کواپنےریونیو میں بھی شدید کمی کا سامنا آ ہے. پنجاب حکومت کی جانب سےصنعت کاروں کو 18 ارب روپےکا ٹیکس ریلیف پیکج دیا گیا ہے1ارب روپےمحکمہ صحت کو کورونا سےمتعلق انتظامات کےلیےدئیےگئےہیں۔ دس ارب روپے انصاف امداد پروگرام کےلیےرکھے گئے ہیں۔

 یاد رہے پنجاب حکومت نے بجٹ 21- 2020 کی تیاریاں تو شروع کردیں ہیں۔وزیرخزانہ نے مختلف سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مشاورتی عمل کا آغاز کردیا گیا تھا۔ رواں سال 350 ارب کا ڈویلپمنٹ بجٹ پیش کیا جا نے کا امکان ہے مرتب کی گئی تجاویز میں کہا گیا ہے کہ اتھارٹی بنانے کے بجائے نجی شعبے پر انحصار بڑھایا جائے گامگر ملکی صورت حال کے پیش نظر وفاقی حکومت نے ابھی تک کوئی احکامات جاری نہیں کئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پیش کئے جانے والے بجٹ میں سرکاری سطح پر اتھارٹی کے قیام کی بجائے پرائیویٹ سیکٹر کو موقع دیا جائے گا۔ جبکہ حکومت کاروبار میں آسانی کے لیے درخواست گزاروں سے پانچ کی بجائے ایک ریٹرن کے لیے بھی تجویز زیر غور ہے۔ تجاویز میں کہا گیا ہے کہ صنعتی شعبہ کی ترقی میں حائل رکاوٹوں کے خاتمے کے لیے بھی سٹیک ہولڈرز کو پنجاب حکومت کی جانب سے یقین دہانی کروائی گئی ہے۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.