مرغزار چڑیا گھر: تنازعہ سلجھنے کی بجائے مزید الجھنے لگا،جانور رل گئے

اسلام آباد: مرغزار چڑیا گھر کے بے زبان جانور بے حال ہوگئے ہیں۔چڑیا گھر میں کبھی سہولیات کا فقدان تو کبھی جانوروں کی خوراک کو رقم ہی نہیں۔

تفصیل کے مطابق چیئرمین وائلڈ لائف انیس الرحمان نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر درخواست میں موقف اپنایا کہ اگر وزارت موسمیاتی تبدیلی کے پاس فنڈز نہیں تو وہ چڑیا گھر کا انتظام سنبھالنے کی ذمہ داری لیتے کیوں ہیں؟ جس پر وزارت موسمیاتی تبدیلی نے چیئرمین وائلڈ لائف کو حکومتی پالیسی سے ہٹ کے موقف اختیار کرنے پر شوکاز نوٹس بھی جاری کر دیا۔

وزارت موسمیاتی تبدیلی کی جانب سے جاری شوکاز نوٹس میں لکھا گیا کہ انیس الرحمان نے عدالتی کارروائی کے دوران وزارت کے خلاف موقف اپنایا۔ جس سے وہ سینئر افسران کی تضحیک کے مرتکب ہوئے ہیں۔ بطور سرکاری افسر ان پر حکومتی پالیسی کے مطابق کام کرنا لازم ہے۔ وضاحت نہ دینے پر چیئرمین وائلد لائف مینجمنٹ بورڈ کو سخت کارروائی کی دھمکی بھی دیدی گئی۔

ہائیکورٹ نے وزارت موسمیاتی تبدیلی کا شوکاز نوٹس معطل کر کے وزارت موسمیاتی تبدیلی سے جواب طلب کر لیا ہے کہ کس قانون کے تحت چئیرمین وائلڈ لائف کو شوکاز نوٹس جاری کر کے جواب طلب کر لیا ہے۔ عدالت نے کیس کی سماعت 24 اپریل تک ملتوی کر دی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں