قرض کی قسط ادائیگی کیس کی سماعت آٹھ مئی تک ملتوی

اسلام آباد ہائیکورٹ میں قرض کی عدم ادائیگی کے باعث بنک کی جانب سے شہری کو حراساں کئے جانے کے خلاف درحواست کی سماعت ہوئی۔ درخواست کی سماعت چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کی۔
چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بہت اہم معاملہ عدالت میں اٹھایا گیا ہے۔
چیف ایگزیکٹو نیشنل رورل سپورٹ پروگرام راشد باجوہ عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔ راشد باجوہ نے عدالت کو بتایا کہ قرضوں کی ادائیگی کے لئے ایک سال کا وقت دیدیا گیا ہے۔ چھوٹے قرضے دینے کے لئے این آر ایس پی کو کمرشل بنکوں سے قرض لینا پڑتا ہے۔ کمرشل بنکوں کو قرضوں کی اقساط ادا نہ کی گئیں تو وہ قرض ملنا بند ہو سکتا ہے۔ راشد باجوہ نے عدالت سے استدعا کی کہ عدالت اس حوالے سے کمرشل بنکوں کو بھی ہدایات جاری کرے۔ این آر ایس پی کے ریجنل دفاتر میں فوکل پرسن مقرر کر دیا جائے جو لوگوں کی راہنمائی کرے۔ عدالت نے سماعت آٹھ مئی تک ملتوی کر دی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment