سپریم کورٹ: پارک لین ٹاور کیس میں ملزمان کے وکیل کو مزید مہلت مل گئی

سپریم کورٹ نے پارک لین ٹاور کیس میں ملزمان کے وکیل کو دس روز میں دستاویزات جمع کروانے کی مہلت دے دی ہے۔

رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ میں جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے پارک لین ٹاور ریفرنس کے ملزمان اقبال نوری اور محمد حنیف کی ضمانت درخواستوں پر سماعت کی ۔ نیب کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ آصف علی زرداری اور عبدالغنی مجید کو طبی بنیادوں پر ضمانت دی گئی ہے کیس میں ابھی مزید تحقیقات جاری ہیں۔ ملزمان کے وکیل نے بتایا کہ رہن رکھی گئی جائداد آ ج بھی موجود ہے جائیداد کی قیمت قرض کی رقم سے زیادہ ہے۔ ہائیکورٹ نے جائیداد کی قیمت کو مدنظر نہیں رکھا۔ نیب تسلیم کرتا ہے کہ دونوں ملزمان صرف کمپنی کے ملازمین تھے۔ اصل فائدہ آ صف زرداری اور حسین لوائی نے اٹھایا۔ جسٹس یخیی آفریدی بولے کہ کیا ملزمان قرض کی رقم واپس دینے کو تیار ہیں؟جس پر نیب کے وکیل نے کہا کہ یہ کیس قرضہ واپسی کا نہیں منی لانڈرنگ کا ہے۔ ملزمان نے 3ارب 77 کروڑ کا غیر قانونی قرضہ لیا ہے ملزمان کے خلاف نیشنل بینک اورسمٹ بینک نے قرضہ کی واپسی کیلئے سول مقدمات دائر کررکھے ہیں۔ عدالت اجازت دے تو رہن رکھی گئی جائداد کے دستاویزات پیش کرنا چاہتا ہوں جس پرعدالت نے ملزمان کے وکیل کو دستاویزات جمع کروانے کی اجازت دیتے ہوئے سماعت دس روز کیلئے ملتوی کردی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment