اقتصادی رابطہ کمیٹی نے 50 ارب روپے کے ریلیف پیکج کی منظوری دے دی

اقتصادی رابطہ کمیٹی نے چھوٹا کاروبار 50 ارب روپے کے ریلیف پیکج کی منظوری دے دی۔ پیکج کے تحت چھوٹے دکانداروں اور صنعتکاروں کے تین ماہ کے بجلی بلز حکومت ادا کرے گی۔

رپورٹ کے مطابق مشیر خزانہ حفیظ شیخ کی زیر صدارت ہونیوالے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں چھوٹا کاروبار ریلیف پیکج کی منظوری دے دی گئی ہے ریلیف پیکج کے لیے 50 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔  پیکج کے تحت چھوٹے دکانداروں اور صنعتکاروں کے تین ماہ کے بجلی کے بلز حکومت ادا کرے گی۔ وفاقی وزیر صنعت و پیداوار حماد اظہر نے اسلام آباد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام سے 35 لاکھ کاروبار مستفید ہوسکیں گے اگلے تین ماہ تک بجلی کا بل حکومت ادا کرے گی۔ پانچ کلو واٹ اور 70 کلو واٹ کے کمرشل میٹرز کے صارفین اس سے فائدہ اٹھاسکیں گے۔ چھوٹے دکانداروں کے بجلی کے بلز میں پچھلے سال کے مئی جون اور جولائی کی رقوم بلز میں لوڈ کردی جائے گی یہ رقم چھ ماہ تک بجلی کے بلوں میں شامل رہے گی۔ دکاندار جب بھی اپنا کاروبار کھولیں گے ان کے بجلی کے بلز حکومت ادا کرے گی اس سے32 لاکھ کمرشل اور 4 لاکھ چھوٹی صنعتوں کو فائدہ ہوسکے گا۔ کراچی کے چھوٹے دکانداروں کو بھی اس کا فائدہ ہوگا۔کورونا وائرس کی وجہ سے چھوٹی دکانوں کو ریلیف فراہم کیا جائے گا۔ مختلف سیکٹرز کے لیے پالیسی اگلے فیز میں لائیں گے۔ حماد اظہر نے کہا کہ دیہاڑی دار مزدوروں کے لیے 75 ارب روپے کے ریلیف پیکج کی منظوری دی گئی ہے مزدوروں کو 12 ہزار روپے فراہم کیے جائیں گے۔اس اسکیم سے 40 سے 60 لاکھ مزدور فائدہ اٹھا سکیں گے نوکریوں سے نکالے گئے افراد پورٹل پر اپنی رجسٹریشن کرا سکیں گے۔ کابینہ سے منظوری کے بعد ان پیکیجز کو نافذ کردیا جائے گا بلا ضمانت قرضوں پر بھی مشاورت جاری ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment