کورونا وائرس: ایف بی آر کا 200 ارب روپے کا ٹیکس ہڑپ

اسلام آباد: کورونا وائرس اپریل میں ایف بی آر کا 200 ارب روپے کا ٹیکس کھا گیا۔ 10 ماہ میں ایف بی آر کا ٹیکس شارٹ فال 910 ارب روپے ہوگیا ہے۔ جولائی سے اپریل تک ایف بی آر نے 3424 ارب روپے اکٹھے کرلیے ہیں۔ کورونا وائرس کے بعد ایف بی آر کو 5238 ارب کی بجائے 3900 ارب روپے کا ٹیکس اکٹھا کرنا ہوگا۔

نیوزرپورٹ کے مطابق ایف بی آر نے اپریل میں 257 ارب 57 کروڑ روپے کا ٹیکس اکٹھا کرلیا ہے ایف بی آر کو اپریل میں 457 ارب روپے کا ٹیکس اکٹھا کرنا تھا تاہم کورونا وائرس کے باعث اپریل میں ٹیکس وصولیوں میں 200 ارب روپے کی کمی ہوئی۔ کورونا وائرس کے باعث ایف بی آر کا اپریل کا نظر ثانی شدہ ہدف 200 ارب روپے کردیا گیا تھا 10 ماہ میں ایف بی آر کا ٹیکس شارٹ فال 910 ارب روپے ہوگیا۔ جولائی سے اپریل تک ایف بی آر نے 3424 ارب روپے کا ٹیکس اکٹھا کیا ہے جولائی سے اپریل تک ایف بی آر کو 4334 ارب روپے کا ٹیکس اکٹھا کرنا تھا کورونا وائرس کے باعث ایف بی آر کے ٹیکس ٹارگٹ میں 1300 ارب روپے کی کمی کردی گئی یے ایف بی آر کو 30 جون تک 3900 ارب روپے اکٹھے کرنا ہیں کورونا وائرس سے قبل ایف بی آر کو 30 جون تک 5238 ارب روپے کا ٹیکس ہدف پورا کرنا تھا 10 ماہ میں ایف بی آر نے 116 ارب 96 کروڑ روپے کے ٹیکس ریفنڈز جاری کیے۔ جولائی سے اپریل تک ایف بی آر نے 15 ارب 50 کروڑ روپے کے ایڈوانس ٹیکس اکٹھے کیے۔ ایف بی آر نے اپریل میں 15 ارب روپے کے ٹیکس ری فنڈز جاری کیے۔ اس کے علاوہ ایف بی آر نے اپریل میں 90 کروڑ روپے کا ایڈوانس ٹیکس اکٹھا کیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment