رمضان سے قبل اشیاء خورونوش مہنگی ہوگئیں

رمضان المبارک سے قبل ملک میں اشیاء خورونوش کی قیمتیں آسمان کو چھو گئیں۔ اپریل کے مہینے میں دالیں، بیسن، پھل اور انڈوں سمیت کئی اشیاء کے نرخوں میں اضافہ ہوا۔ ادراہ شماریات نے فہرست جاری کردی۔

ادارہ شماریات کا کہنا ہے کہ مارچ کے مقابلے میں اپریل کے دوران مہنگائی کی شرح 0.8 فیصد کم ہوئی تاہم اپریل 2019 سے اپریل 2020 تک مہنگائی کی شرح 8.5 فیصد رہی جولائی سے اپریل تک مہنگائی کی شرح 11.22 فیصد رہی۔ اپریل میں دال مسور 27.54 فیصد اور دال مونگ 23.11 فیصد مہنگی ہوئی۔ ایک ماہ میں پھل اور انڈے 17.71 فیصد، چینی 2.55 فیصد، دال ماش 14 فیصد دال چنا 10.43 فیصد، بیسن 8 فیصد،  لوبیا 4.73 فیصد اور سفید چنے 4.3 فیصد مہنگے ہوئے۔ ادارہ شماریات کے مطابق جولائی سے اپریل تک پیاز 100 فیصد اور گیس 69 فیصد مہنگی ہوئی۔ 10 ماہ میں دال مونگ 63.60 فیصد، آلو 57 فیصد،  دال ماش 41.14 فیصد، گڑ 32 فیصد اور چینی 31.94 فیصد مہنگی ہوئی۔ 10 ماہ میں کوکنگ آئل 24 فیصد اور گندم 19.3 فیصد مہنگی ہوئی۔

ادارہ شماریات کے مطابق اپریل 2019 کے مقابلے میں اپریل 2020 میں دال مونگ 101 فیصد مہنگی ہوئی۔ ایک سال میں آلو  92.2 فیصد اور گیس کی قیمت  54.8 فیصد بڑھ گئی۔ اس دوران دال ماش 67.8 فیصد اور دال مسور 47.6  فیصد، چنے کی دال 31 فیصد،  لوبیا اور بیسن 29 فیصد، انڈے 44 فیصد اور پیاز 40.7 فیصد، گڑ 33.7 فیصد اور چینی 27.8 فیصد مہنگی ہوئی ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment