وفاقی حکومت کے امتحانات منسوخی کے فیصلہ پر طلبا تاحال الجھن کا شکار

اسلام آباد: وفاقی حکومت کےامتحانات منسوخی کے فیصلہ پرطلبا تاحال الجھن کا شکار ہیں کیونکہ ملک بھرمیں طلبا کوبغیرامتحان کے اگلی کلاس میں پروموٹ کرنےکے لیے تاحال کوئی فارمولہ طے نہیں کیا جاسکا۔

رپورٹ کے مطابق وزیرتعلیم شفقت محمود کی زیرصدارت معاملے پرغوروخوض کے لیے اہم اجلاس آج وزارت تعلیم میں ہو گا۔ملک بھرکے تعلیمی بورڈزکے چیئرمینوں کو ویڈیولنک پراجلاس میں شرکت کی ہدایت کی گئی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے اجلاس میں دسویں اور بارہویں کے امیدواروں کو 4 سے6 فیصد اضافی مارکس دینے پر بھی غور ہوگا۔

خیال رہے 29 تعلیمی بورڈز، 3 ٹیکنیکل بورڈز میں تقریبا 40 لاکھ طلبا نے داخلے بھجوائے تھے۔ وزارت تعلیم و پیشہ وارانہ تربیت کے تعلیمی بورڈز کو پرائیویٹ اسٹوڈنٹس کو پروموٹ نہ کرنے کی بھی تجویز دی گئی ہے۔ بورڈ کے امتحانات میں 30 سے 35 فیصد پرائیویٹ امیدوار، سپلی اور اکٹھے امتحانات کے اسٹوڈنٹس شامل ہیں۔ کیمبرج نے بھی پرائیویٹ طلبا کوپروموٹ نہ کرنیکا فیصلہ کیا تھا۔

وزارت تعلیم نے بورڈز سے میٹرک اور انٹرمیڈیٹ تمام سٹوڈنٹس کا ڈیٹا حاصل کر لیا ہے۔ ہر بورڈ گزشتہ تین سالوں کے نتائج کا جائزہ لے کر نمبروں کے تناسب سے امیدواروں کو پروموٹ کرے گا۔

تا حال نمبرامپروو کرنے والے طلبا کیلئے بھی کوئی فارمولا نہ بن سکا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment