کنگ آف لپ اسٹک: آپ کیلیے بہترین لپ اسٹک برانڈ متعارف کرایں گے

بیجنگ: دنیا کی مہنگی ترین لپ اسٹک کی آزمائش اور انہیں مشہور کرنے کی ذمے داری کسی خاتون ماڈل کی بجائے ایک مرد وی لاگر نبھا رہے ہیں جنہیں انکی مہارت کی بنا پر ’کنگ آف لپ اسٹک‘ یا ’آئرن لپس‘ کہا جاتا ہے۔

تفصیل کے مطابق لائی چیاقی مہنگے ترین برانڈز کی لپ اسٹک آزماتے ہیں۔ لائی چینی ٹِک ٹاک اور دیگر سوشل نیٹ ورک پر بھی وہ بہت مشہور ہیں۔ لائی جس لپ اسٹک کو پسند کرکے اس کا اقرار کرلیں وہ فوراً مشہور ہوجاتی ہے۔ اسی وجہ سے لپ اسٹک بنانے والے ان پر خاص توجہ دیتے ہیں اور انہیں آزمائش کے لیے خطیر رقم بھی فراہم کی جاتی ہے۔

یوں تو یہ شعبہ خواتین کیلیے مخصوص کیا جاتا ہے اور چین جیسے روایتی ملک میں اسے بطور کیریئر اپنانا ایک گھاٹے کا سودا ہے۔ لیکن لائی چیاقی نے ان دونوں اندازوں کو غلط ثابت کردکھایا ہے اور وہ بے تحاشہ رقم کما رہے ہیں۔ علاوہ ازیں کئی کمپنیوں کے ساتھ ان کا اشتراک جاری ہے جس میں خصوصی توجہ لپ اسٹک پر دی جاتی ہے۔ شروع میں لوگوں نے لائی کے کام کو احمقانہ قرار دیا کہ وہ خواتین کو متاثر نہیں کرسکیں گے لیکن اب وہ پورے چین میں مشہور ہوچکے ہیں اور لپ اسٹک بادشاہ کہلاتےہیں۔

 لپ اسٹک کے بادشاہ سات اورآٹھ گھنٹے تک بھی لائیو رہتے ہوئے اپنا کام کرتے رہتے ہیں اور ایک سیشن میں کئی درجن لپ اسٹک آزماتے ہیں۔ ان کا دعویٰ ہے کہ وہ ایک روز میں کل 360 سے زائد لپ اسٹک ٹیسٹ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ اسی بنا پر انہیں فولادی ہونٹ والا بھی کہا گیا ہے کیونکہ اتنی بڑی مقدار میں مختلف لپ اسٹک لگانے سے ہونٹوں کو شدید نقصان پہنچ سکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں