اسٹورر نے عمارتوں اور پہاڑیوں پر حیرت انگیز کرتب دکھانے کا ایک عشرہ مکمل کر لیا


لندن: چھوٹی پہاڑیوں، چھتوں اورعمارتوں کے درمیان حیرت انگیز کرتب دکھانے کے شوقین افراد کو پارکر کے نام سے پکارا جاتا ہے اور ایسے ہی افراد پر مشتمل اسٹورر نامی برطانوی پارکر گروپ کو اب دس برس مکمل ہوچکے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ دس برس کے دوران اس گروپ نے دبئی، استنبول، چین، جاپان، اسپین، سیئول اور دنیا کے کئی مقامات پر اپنی دلیری کے جوہر دکھائے۔ یہاں تک کہ انہیں ہالی وڈ کی فلموں میں بھی کرتب دکھانے کا موقع دیا گیا۔اس گروپ نے یوٹیوب پر سبسکرائبرز کی تعداد 50 لاکھ مکمل ہونے پر اپنی ایک عشرے کی کہانی ویڈیو کی صورت میں شیئر کی ہے۔

اسٹورر کے اراکین میں ٹیلر، ٹوبی، سیگر، ساشا پوویل، جوشوا، کیلم پوویل اور اس کے بانیان میکس اور بیج کیو شامل ہیں۔ ان سب نے برسوں کی لگا تار محنت کے بعد پارکر بننے پر مہارت حاصل کی ہے۔ گزشتہ برس ہالی وڈ کے مشہور ہدایت کار مائیکل بے نے انہیں اپنی فلم ’سکس انڈرگراؤنڈ‘ میں کام کے لیے مدعو کیا تھا جو نیٹ فلکس کے لئے بنائی گئی ہے۔

اسٹورر کے سربراہ ایک مظاہرے کے دوران سامنے کے چار دانت تڑوا بیٹھے ہیں جبکہ ٹیلر کا ٹخنہ بھی ایک بار بہت بری طرح مجروح ہوکر ٹوٹ گیا تھا۔ لیکن یہ دونوں گزشتہ 15 برس سے اب تک پارکر بنے ہوئے ہیں۔ اس کے علاوہ اوپر کی ویڈیو میں بھی اسٹورر اراکین کو زخمی ہوتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

یاد رہے کہ پارکر عمل بہت خطرناک اور جان لیوا ثابت ہوسکتا ہے۔ اس لیے پارکر کرتب آزمانے سے ہر طرح کا گریز کیا جائے۔


Leave A Reply

Your email address will not be published.