مظفر آباد: لاک ڈاﺅن میں نرمی، کاروباری مراکز کھولنے کی اجازت

مظفرآباد — پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کی حکومت نے لاک ڈاﺅن میں نرمی دیتے ہوتے ہوئے حفاظتی تدابیر کے ساتھ کاروباری مراکز کھولنے کی اجازت دیدی ہے، جبکہ جمعہ اور منگل کو مکمل لاک ڈاون ہوگا۔

ٹرانسپورٹ کے حوالے سے بدھ کو حکومت کی جانب سے ایس او پی جاری کیا جائے گا، جبکہ تعلیمی ادارے، عوامی اجتماعات، کھیل کے میدان، شادی ہالز، بیوٹی پارلرز بند رہیں گے۔

پاکستانی کشمیر کے وزیر اور حکومتی ترجمان، مصطفیٰ بشیر نے منگل کے روز کہا ہے کہ پاکستانی کشمیر میں سیاحوں کے داخلے پر پابندی بدستور برقرار رہے گی۔

ترجمان نے کہا کہ 12 سال سے کم اور ساٹھ سال سے زائد افراد کے بازاروں میں آنے پر پابندی ہوگی۔ تاجروں پر محکمہ صحت کی ایس او پی فالو نہ کرنے کی صورت میں پانچ سے 15 ہزار کا جرمانہ ہو گا۔ درمیانی درجے کے ہوٹلوں کو خلاف ورزی کی صورت میں 15 ہزار اور بڑے ہوٹلوں کو ایک لاکھ تک جرمانہ ہوگا۔

مساجد، امام بارگاہوں میں ایس او پی تحت عبادت کی اجازت ہو گی۔ خریدار کیلئے ماسک نہ پہننے کی صورت میں تاجر کوئی بھی چیز فروخت نہیں کرے گا۔ دکانداروں کی جانب سے خلاف ورزی کی صورت میں پانچ سے پندرہ ہزار جرمانہ ہوگا۔

کاروبار فجر سے اذان مغرب تک کھلے رکھے جا سکیں گے۔ بیکریز، سبزی و فروٹ، دودھ، دہی، گوشت، مرغی کی شاپس رات آٹھ تک کھلی رکھی جا سکیں گی۔

حفاظتی اقدامات کے حوالے سے جاری ہونے والی ایس او پیز پر عملدرآمد یقینی بنانا ہو گا۔ ریسٹورنس کے اندر بیٹھ کر کھانا کھانے پر پابندی ہو گی۔ بنک، پرائیویٹ ادارے کم سے کم سٹاف سے کیساتھ کام کریں گے اور سٹاف، کسٹمرز کے درمیان چھ فٹ کا فاصلہ یقینی بنائیں گے۔

ایس او پیز کی خلاف ورزی پر مجسٹریٹ موقع پر کاروبار سیل کرنےاور جرمانے کرنے کے مجاز ہوں گے۔ گھر سے باہر نکلنے والے شخص کو ماسک لازمی پہننا ہوگا خلاف ورزی پر پانچ سو روپے جرمانہ ہوگا

متعلقہ خبریں

Leave a Comment