جارج فلائیڈ کی آخری رسومات ادا، 6 ہزار سے زائد لوگوں نے کی شرکت

امریکہ میں پولیس تشدد سے ہلاک ہونے والے جارج فلائیڈ کے لیے اس کی جائے پیدائش نارتھ کیرولائینا میں جنازے کی رسومات کے بعد تیسری رسومات ٹیکساس میں منعقد کی گئیں۔
جارج فلائیڈ کا تابوت ایک چرچ میں رکھا گیا تھا جہاں لوگ جوق درجوق آ کر انہیں خراجِ عقیدت پیش کرتے رہے۔
ٹیکساس کے گورنر گریگ ایبٹ نے بھی طبئ مسائل کئ باعث وہیل چیئر کے ذریعے اس رسم میں شرکت کی۔
آج مرحوم کے اہل خانہ کی جانب سے خصوصی رسوم کی ادائیگی کے بعد اسے ہیوسٹن کے میموریل گارڈنز قبرستان میں دفن کر دیا جائیگا۔
دوسری جانب پیر کو ہی منی ایپلس پولیس کے اہلکار ڈیرک چاون بھی پہلی مرتبہ عدالت کے سامنے پیش ہوا۔ ڈیرک چاون وہی پولیس افسر ہے جنہوں نے 25 مئی کو جارج فلائیڈ کی گردن پر تقریباً نو منٹ تک اپنا گھٹنا رکھا تھا جس کے باعث سانس رکنے سے فلائیڈ کی ہلاکت ہوئی۔
یہ عدالت سماعت کیمروں اور انٹر نیٹ کی وساطت سے سر انجام پائی۔ عدالت نے قاتل کے لیے ایک ملین اڑھائی لاکھ ڈالر کی کفالت رکھی ہے تو دوسری پیشی 29 جون کو منعقد کرنے کا اعلان کیا ہے

متعلقہ خبریں

Leave a Comment