اسلام آباد ہائیکورٹ نے پسند کی شادی کرنے والی لودھراں کی دو بہنوں کی درخواست پر سماعت کے دور ان ایس ایس پی آپریشنز اسلام آباد کو جمعرات کو طلب کر لیا

ویب ڈیسک۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے پسند کی شادی کرنے والی لودھراں کی ملیکہ فاطمہ اور اسکی بہن کے تحفظ کے لئے دائر درخواست پر سماعت کے دور ان ایس ایس پی آپریشنز اسلام آباد کو کل جمعرات کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا ہے۔
چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کیس نے اسلام آباد وفاقی پولیس کی کارکردگی پر سنجیدہ سوالات کھڑے کردیئے ہیں۔
چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے پسند کی شادی کرنے والی لودھراں کی ملیکہ فاطمہ اور اسکی بہن کے تحفظ کے لئے دائر درخواست پر سماعت کی، دوران سماعت چیف جسٹس کے استفسار پر ایس ایچ او تھانہ شمس کالونی نے بتایا کہ جنوری میں شادی ہوئی۔۔ لڑکے اور لڑکی کے درمیان 5 سال پہلے رابطہ فیس بک پرہوا۔۔ لڑکی کا شوہرنہیں مل رہا، اس کا موبائل نمبر بھی بند ہے، چیف جسٹس نے کہا کہ پھر آپ چھٹی کریں اور گھربیٹھ جائیں۔۔یہ کوئی طریقہ نہیں۔۔۔ایس ایس ایس پی نے کیا تحقیق، کیں، ایک شخص غائب ہے، اب آپ لوگ ذمہ دار ہیں، دوسری جانب کیا کوئی طاقت ور لوگ ہیں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment