چینی 70 روپے فی کلو کیوں فروخت نہیں ہو سکی، چیف جسٹس کا استفسار

اسلام آباد ۔ چینی 70 روپے فی کلو فروخت نہ ہو سکی، حکم امتناع کی شرط پر عمل درآمد نہ ہونے پر اسلام آبادہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے شوگر ملز ایسوسی ایشن کا کیس 25 کی بجائے 19 جون کو سماعت کیلئے مقرر کرنے کی ہدایت کردی۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے رحیم یار خان سے گنے کے کاشتکار کی شوگر ملز کیس میں فریق بننے کی درخواست پر سماعت پر سماعت کی، وفاقی حکومت نے گنے کے کاشتکار کی کیس میں فریق بننے کی حمایت کردی۔

چیف جسٹس نے استفسارکیا کہ چینی 70 روپے فروخت کرنے کا کیا بنا؟ جس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل طارق کھوکھرنے کہاکہ خط و کتابت جاری ہے لیکن مارکیٹ میں چینی 70 روپے کلو دستیاب نہیں،جس پر چیف جسٹس نے کہاکہ پھر تو بات ہی ختم ہو گئی، حکم امتناع تو چینی کی قیمت کم کرنے سے مشروط تھا۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نےاستدعا کی کہ مرکزی کیس آئندہ جمعہ کو مقرر کیا جائے، جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ مشروط حکم امتناع پر عمل نہیں ہواتو کیس جمعہ کے لیے مقرر کر دیتے ہیں،ایڈیشنل اٹارنہ جنرل نے کہاکہ تو پھر کیا حکم امتناع ختم ہو گیا؟ جس پر چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ریمارکس دیے کہ جب مشروط حکم امتناع پر عمل ہی نہیں ہوا تو پھر حکم امتناع کیسا،عدالت اس طرح قیمتوں کا تعین تو نہیں کر سکتی ہے یہ تو ایگزیکٹو کا کام ہے۔

عدالت نے جمعہ 19 جون کو شوگر ملز ایسوسی ایشن کا کیس مقرر کرنے کی ہدایت کردی، اس سے قبل عدالت نے شوگر ملز ایسوسی ایشن کی درخواست 25 جون کو سماعت کے لئے مقرر کی تھی

متعلقہ خبریں

Leave a Comment