سورج گرہن: پاکستان سمیت دنیا کے مختلف ممالک میں آج ’رِنگ آف فائر‘ کا مشاہدہ

ویب ڈیسک ۔ پاکستان سمیت دنیا بھر کے کئی علاقوں میں سال 2020 کا پہلا سورج گرہن کا نظارہ کیا گیا۔

 

پاکستان میں آج صبح 9 بج کر 26 منٹ پر سورج کو گرہن لگنا شروع ہوا تھا جب کہ 11 بجے کے بعد سورج گرہن اپنے عروج پر پہنچا۔ کچھ علاقوں میں جزوی اور کہیں مکمل طور پر روشنی کا ہالہ دیکھا گیا ،، اسلام آباد میں جزوی سورج گرہن کا آغاز 9 بج کر 50 منٹ پر ہوا تھا جب کہ 82 فیصد سورج کو گرہن لگا۔

سندھ کے شہرسکھر اورگردونواح میں مکمل سورج گرہن ہوا جہاں رنگ آف فائر کا نظارہ بھی دیکھا گیا، سکھر کے علاوہ ملک کے دیگر شہروں میں جزوی سورج گرہن ہوا، لاہور،کوئٹہ،اسلام آباد اورکراچی سمیت ملک کے کئی شہروں میں جزوی سورج گرہن دیکھا گیا۔

اس گرہن کو رِنگ آف فائر کا نام دیا گیا ہے کیونکہ اس کے دوران چاند سورج کے درمیان آ جائے گا جس میں چاند سورج پر چھا جاتا ہے۔ ایسی صورت میں سورج کا بیرونی حصہ ایسے دکھائی دیتا ہے جیسے کوئی رِنگ یا چھلہ ہو۔

ائرے’ کی شکل کے سورج گرہن کے مناظر پاکستان میں بھی دیکھے گے ،، صبح 9 بج کر 26 منٹ پر شروع ہونے والا سورج گرہن اختتام کو پہنچ گیا ،، کچھ علاقوں میں جزوی اور کہیں مکمل طور پر روشنی کا ہالہ دیکھا گیا۔

اللہ کے حضور استغفار کے لیے مختلف شہروں میں نماز کسوف بھی ادا کی گئی۔

وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فوادچودھری نے ٹویٹ پیغام میں بتایا کہ دنیا میں رواں سال کا دوسرا سورج گرہن 14دسمبر کو لگے گا لیکن وہ پاکستان میں دکھائی نہیں دےگا۔اس کے علاوہ رواں سال چار چاند گرہن بھی لگیں گے۔

حکمہ موسمیات کے مطابق لاہورمیں سورج گرہن کا آغاز صبح 9 بج کر 48 منٹ پر ہوا تھا جب کہ لاہور میں سورج گرہن کا اختتام 1 بج کر 10 منٹ پر ہوا۔ کوئٹہ میں جزوی سورج گرہن کا دورانیہ 3گھنٹے سے زائد رہا، گوادر ،، لاڑکانہ اور سکھر میں ‘رنگ آف فائر’ کا نظارا بھی دیکھا گیا۔

ماہرین اور ڈاکٹرز کی جانب سے جاری مشوروں کے باعث یہ مناظر اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کرنے کے مناظر کہیں نظر نہیں آئے ۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment