نارووال سپورٹس سٹی کرپشن کیس میں نیب نے گواہوں کی پیشی کے لیے مزید وقت مانگ لیا

اسلام آباد ۔ احسن اقبال نے نیب کو انتقامی کارروائی کا ادارہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر گوہاں نہیں تھے تو دو ماہ جیل میں کیوں رکھا گیا،، مدینہ کی ریاست کی باتیں کرنے والے سویت یونین کے پیروکار لگ رہے ہیں۔

 

نارووال سپورٹس سٹی کرپشن کیس کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے کی۔نیب نے ریفرنس جمع کرانے کے لیے پھر مہلت مانگی تو احسن اقبال نے کہا اگر گواہ ہی نہیں ہیں تو مجھے گرفتار کرکے دو ماہ جیل میں کیوں رکھا ؟ نیب نے موقف اپنایا کہ گواہوں کو طلب کیا لیکن کورونا کی وجہ سے پیش نہیں ہورہے،جج نے ریمارکس میں کہا کہ ایسے نہیں چلے گا، تفصیل بتائیں ریفرنس دائر کرنے میں کیا مشکل ہے ؟ کیس کی مزید سماعت 20 جولائی کو ہو گی۔

 

اس موقع پر میڈیا سے گفتگو میں احسن اقبال نے کہا کہ نیب صرف انتقامی کارروائیاں یاں کر رہا، ابھی کرونا سے صحت یاب ہوا لیکن پھر عدالت مین پیش ہوا گواہاں کیوں پیش نہ ہویے پتا نہیں ۔۔۔۔ جیل مین رکھنے کی منطق بھی سمجھ سے بالا تر ہے۔

 

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ چینی اسکیندل میں ایک شخص کو بچانے کے لیے ساری انڈسٹری کو چور ڈکلیر کر دیا گیا، اس حکومت کے اب جانے کا وقت آ چکا ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment