چین سے بھگوان دارآمد نہ کیے جائیں، بھارتی پنڈت

بھارتی کے اخبارات نے یہ رپورٹ شائع کی ہے کہ بھارت میں پوجا کے لیے گھروں اور مندروں میں رکھے گئے سبھی بھگوان چین سے درآمد شدہ ہیں،چائنہ سے درآمد شدہ بھگوان کوالٹی میں بہترین اور انتہائی سستے ھوتے ہیں۔

 

اخبارات کے مطابق پوجا کے لیے گھروں اور مندروں میں رکھے گئے بھگوان دیکھنے میں بہت صفائی سے بنے ہوئے نظر آتے ہیں اور ان کی پائیداری بھی بیمثال ھے، بھگوان آسانی سے ٹوٹتے بھی نہیں اور خراب بھی نہیں ھوتے۔

 

لیکن اب بھارت میں پنڈتوں کی جانب سے یہ دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ چین کے بھگوان دو نمبر ہیں اسی وجہ سے ھندوؤں کی دعائیں قبول نہیں ھو رہیں۔

 

پنڈتوں کی جانب سے حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ فوری طور پر چینی بھگوانوں کی درآمد پر پابندی عائد کی جائے اور بھارت میں چین کی طرز کے اعلیٰ کوالٹی کے اور سستے بھگوان بنانے کا سلسلہ شروع کیا جائے جبکہ دوسری جانب یہ کہا جا رہا ہے کہ بھارت میں اتنی کم قیمت میں اعلی کوالٹی کے اتنے پائیدار بھگوان بنانا ناممکن ھے۔

 

یاد رہے بھارت اور چین کے درمیان سرحدی تنازعہ میں بھارتی فوج کے بیس فوجی ہلاک ہونے کے بعد بھارتی قوم پرستوں نے چین سے درآمد شدہ اشیاء پر پابندی لگانے کے لیے حکومت پر دباؤ دیا ہے، جس کے بعد حکومت نے پہلے مرحلے میں پچاس کے قریب چینی ایپس کو بھارت میں بلاک کر دیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment