پارک لین ریفرنس میں آصف علی زرداری پر آج بھی فرد جرم عائد نہ ہو سکی

پارک لین ریفرنس میں آصف علی زرداری پر آج بھی فرد جرم عائد نہ ہو سکی، سابق صدر کی جانب سے کارروائی روکنے کی درخواست پر اسلام آباد کی احتساب عدالت نے کارروائی موخر کرتے ہوئے سماعت 14 جولائی تک ملتوی کردی۔

 

احتساب عدالت کے جج اعظم خان نے پارک لین ریفرنس کی سماعت کی، آصف علی زرداری اور دیگر ملزمان وڈیو لنک کے ذریعے عدالت میں پیش ہوئے اور ان کی حاضری لگائی گئی، وکیل فاروق نائیک نے فرد جرم عائد ہونے سے روکنے کیلئے درخواست دیتے ہوئے کہا کہ جب تک کام کی باتیں نہ ہو تب تک فرد جرم عائد نہیں کی جا سکتی، جس پر عدالت نے کہا کہ آپ عین اس دن درخواست دائر کر رہے ہیں جب سب چیزیں تیار ہیں اور فرد جرم عائد کرنا ہے ،، فاروق نائیک نے کہا کہ اس کے لیے پڑھنا پڑتا ہے، چیزیں نکالنی پڑتی ہیں، گورنر اسٹیٹ بینک کے لیے قانون کے مطابق نوٹس دینا ضروری تھا، مہینہ نہیں مانگ رہے، مناسب وقت دیں۔

 

نیب پراسیکوٹر نے کہا آصف زرداری کیخلاف اختیار کے ناجائز استعمال، دھوکہ دہی، فراڈ کا مقدمہ ہے ، ہم آج ہی جواب دیں گے، عدالت سے استدعا ہے کہ آصف زرداری کی درخواست پر فیصلہ کرے، وکیل فاروق ایچ نائیک نے درخواست پر دلائل کے لیے وقت درکار کا موقف اپنایا تو عدالت نے فرد جرم عائد کرنے کی کارروائی موخر کرتے ہوئے سماعت 14 جولائی تک ملتوی کردی۔

 

وڈیو لنک پر آصف زرداری سے گفتگو میں فاروق ایچ نائیک نے بتایا کہ پہلے ہماری درخواست پر فیصلہ ہو گا اس کے بعد عدالت فرد جرم عائد کرنے کا بتائے گی اور پھر ٹرائل کا آغاز ہوگا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment