15 ستمبر کو تمام تعلیمی ادارے کھول دئیے جائیں گے، وزیر تعلیم

وفاقی وزیرِ تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ اگر کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے خدشات نہ بڑھے اور دوبارہ لاک ڈاؤن کی کوئی صورتحال پیدا نہ ہوئی تو 15 ستمبر سے تمام تعلیمی ادارے باضابطہ طور پر کھول دئیے جائیں گے۔

 

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے میڈیا بریفنگ کے دوران کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ اگر صحت کے اشاریے بہتر ہیں تو مرحلہ وار تمام تعلیمی اداروں کو کھول دیا جائے، ہم نے صوبوں سے درخواست کی ہے کہ ایس او پیز تحریری طور پر بھیجیں تاکہ مؤثر حکمتِ عملی ترتیب دی جاسکے۔

 

 

وفاقی وزیر شفقت محمود نے کہا کہ تعلیمی ادارے کھولنے سے قبل ایس او پیز کی پریکٹس ضروری ہے جبکہ طلباء کو کب اور کیسے بلانا ہے، یہ فیصلہ یونیورسٹیز پر چھوڑ دیا گیا ہے۔ یونیورسٹیز کو ہدایت دی گئی ہے کہ اس حوالے سے فیصلہ خود کریں تاکہ تعلیمی عمل شروع کیا جاسکے۔

 

 

وزیرِ تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ ہاسٹلز کے حوالے سے یہ بات اہم ہے کہ اگر ایک ہاسٹل میں 100 بچوں کی گنجائش ہے تو صرف 30 کو بلایا جائے گا، باقاعدہ ایس او پیز بنائی جائیں گی۔ ہاسٹلز کی سہولت ان طلباء کیلئے ہوگی جن کے پاس انٹرنیٹ نہیں ہے۔ فی الحال ہاسٹل میں بچوں کو بلانے کی اجازت نہیں دے رہے۔

 

انہوں نے کہا کہ ہم یونیورسٹیز کو عید کے بعد یہ اختیار دے دیں گے کہ وہ ہاسٹلز میں 30 فیصد ایسے طلباء کو بلائیں جو انٹرنیٹ کے ذریعے تعلیم حاصل نہیں کرسکتے۔ تعلیمی عمل سے قبل طلباء، اساتذہ، تدریسی اور غیر تدریسی عملے کا طبی معائنہ لازمی ہوگا تاکہ کورونا وائرس کی روک تھام جاری رہے۔

 

یاد رہے کہ بین الصوبائی تعلیمی کانفرنس میں چاروں صوبوں، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کے وزرائے تعلیم کا ستمبر کے پہلے ہفتے سے سخت ایس او پیز کے ساتھ تعلیمی ادارے کھولنے پر اتفاق ہوا تھا ۔

 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment