اسلام آباد ہائی کورٹ کی شوگر ملز ایسوسی ایشن کی انٹراکورٹ اپیل پر سماعت

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے شوگر ملز ایسوسی ایشن کی انٹراکورٹ اپیل پر سماعت کی۔

 

شوگر ملز ایسوسی ایشن کی جانب سے وکیل مخدوم علی خان نے دلائل دئیے کہ ایڈہاک کمیٹی کی سفارش پر ہمارے خلاف کمیشن بنایا گیا، کمیشن کے ابتدائی طور پر 6 ممبران تھے جبکہ رپورٹ میں 7 ممبران کے دستخط ہیں، ہم نے معاملہ عدالت میں اٹھایا تو اگلے دن حکومت نے دوسرا نوٹیفکیشن پیش کر دی، کمیشن کی تشکیل اور رپورٹ غیرقانونی ہے۔

 

مخدوم علی خان نے دلائل دئیے کہ اسی رپورٹ کی بنیاد پر وفاقی وزراء اور مشیران مغل بادشاہوں کی طرح پریس کانفرنس کرتے اور کہتے ہیں کہ انکو تو ہاتھی کے پاؤں کے نیچے رکھ دینا چاہیے۔

 

جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ کیا رپورٹ کابینہ کے سامنے رکھی گئی تھی جس پر مخدوم علی خان نے بتایا کہ 21 مئی کو رپورٹ کابینہ کے سامنے رکھی گئی اور اسی دن ہی منطور ہو گئی۔

 

عدالت نے دلائل سننے کے بعد اپیل قابل سماعت قرار دیتے ہوئے آئندہ سماعت پر اٹارنی جنرل کو دلائل کے لئے طلب کر لیا۔

 

جسٹس عامرفاروق نے ریمارکس دیے کہ ہم دلائل سے مطمئن ہیں،حکومتی موقف سننے کے لئے نوٹس جاری کر رہے ہیں، سماعت 15 جولائی تک ملتوی کر دی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment