کھٹا میٹھا آلو بخارا

موسم گرما کو اگر پھولوں کا موسم کہا جائے تو غلط نہ ہوا۔ لوگوں کو اپنی پسند کے کئی پھل بازاروں میں دستیاب ہوتے ہیں۔ ایسا ہی ایک پھل آلو بخارہ ہے۔ میٹھا یا کھٹا ہوتا ہےمزیدار رس بھرا آلو بخارا

جو نہ صرف ذائقے دار اور صحت بخش ہے بلکہ اسے خشک کرکے بھی چٹنی یا مختلف شکلوں میں استعمال کیا جاسکتا ہے۔ آلو بخارہ بے شمار طبی فوائد سے مالا مال ہے۔یہ پھل بادام اور آڑو کی نسل کے پھلوں میں شامل ہے۔

 

سرد تاثیر کا حامل یہ پھل حقیقی طور پر ترش ہے مگر پختہ ہوکر جب اس کا رنگ سیاہی مائل ہوجائے میٹھا ہوجاتا ہے۔ اس کے پودے کشمیر‘ ہمالیہ‘ پاکستان‘ افغانستان اور ایران میں بکثرت پائے جاتے ہیں جبکہ اس کا اصلی مسکن دمشق ہے۔ وادی کشمیر میں دلکش باغات کثرت سے پائے جاتے ہیں جن میں انواع و اقسام کے پھل پیدا ہوتے ہیں۔اس میں دوائی اور غذائی دونوں قسم کی خصوصیات نمایاں ہیں۔

 

آلو بخارا بے شمار فوائد کا حامل ہے۔ اس میں بیماریوں سے لڑنے کی صلاحیت موجود ہے۔ یہ ذیابیطس کو کنٹرول کرنے میں مددگار فراہم کرنا ہے ۔ آلو بخارا دماغی صحت کے لیے بھی مفید ہے۔

نظام ہاضمہ کو بہتر کرتا ہے۔ قبض کی شکایت دور کرتا ہے۔ بینائی کے لیے بھی فائدہ مند ہیں۔خشک آلو بخاروں کو کھانا شریانوں میں خون کے بہاﺅ میں مددگار ثابت ہوتا ہے، دل کو مختلف امراض جیسے کارڈیک اریسٹ، فالج اور دیگر امراض سے محفوظ رکھتا ہے۔

آلو بخارے میں موجود وٹامن سی جسمانی دفاعی نظام کو مضبوط کرنے میں مدد دیتا ہے۔ آلو بخاروں میں وٹامن کے اور پوٹاشیم موجود ہوتا ہے جو کہ جسم کی آئرن جذب کرنے کی صلاحیت کو بہتر بناتا ہے۔ خون کو صاف کرتا ہے۔

وہ خواتین و حضرات جو اپنی جلد پر کافی توجہ دیتے ہیں ان کو بتا چلیں کہ آلو بخارا جلد کے لیے بھی فائدہ مند ہے۔ اس میں موجود وٹامن سی جلد پر جھریاں اور فائن لائنز کا خطرہ بھی کم کرتا ہے۔

اس کے علاوہ آلو بخارے ہڈیوں کو مضبوط بناتا ہے، جبکہ خشک آلو بخارے بھی ہڈیوں کو مضبوط بنانے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

 

ایک تحقیق کے مطابق خشک آلوبخارے کے ذریعے آنت کے کینسر کا علاج کیا جاسکتا ہے۔ ٹیکساس یونیورسٹی کی تحقیق کار پروفیسر نینسی ٹرنر نے بتایا ہے کہ خشک آلو بخارے میں ایسی خصوصیات پائی جاتی ہیں جس کی وجہ سے آنت میں ایسے جرثومے پیدا ہوتے ہیں کہ کینسر سے بچا جاسکتا ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment