سی پیک:چین کے 215 انجینئرز اور عملہ آج پاکستان پہنچے گا

پا ک چین راہداری پر کام کرنے کے لیے آج 215 چینی انجینئرز اور عملے کے دیگر ارکان کے ساتھ اسلام آباد ایئرپورٹ پہنچیں گے ۔

تفصیلات کے مطابق آج چین پاک اقتصادی راہداری سی پی ای سی کے متعدد منصوبوں پر کام کرنے والے 215 چینی انجینئرز اور عملے کے دیگر ممبران چین چیجوبہ گروپ کمپنی کے زیر اہتمام چین کی ایئر لائن کے چارٹرڈ طیارے میں چین کے صوبہ سیچوان سے براہ راست اسلام آباد ایئرپورٹ پہنچیں گے۔ ان عملے کو میگا ہائیڈرو پاور پروجیکٹس میں تعینات کیا جائے گا تاکہ تعمیراتی سرگرمیوں کو تیز کیا جاسکے جو حال ہی میں پاکستان میں کورونا وائرس پھیلنے سے تعطل کا شکار ہیں۔ ان منصوبوں میں سوکی، کناری پن بجلی پروجیکٹ ، داسو ہائیڈرو پاور پروجیکٹ ، مہمند ڈیم پروجیکٹ اور نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پروجیکٹ شامل ہیں۔

چینی کمپنی کے آنے والے تمام اراکین کوروناوائرس کی احتیاطی تدابیر کے طور پر چین میں 14 دن قرنطینہ میں گزارنے اور کوویڈ 19 ٹیسٹ کرنے کے بعد براہ راست اسلام آباد ائیرپورٹ سے پروجیکٹ سائٹوں پر قائم قرنطینہ سنٹرز میں منتقل کیا جائے گا، جہاں انہیں کورونا وائرس پھیلاؤ کو کنٹرول کرنے کے لئے کم از کم 14 دن تک رکھا جائے گا اور اس کے ساتھ ساتھ وہ چینی عملے کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔ قرنطینہ کی مدت کی کامیاب تکمیل اور کوویڈ ۔19 کے لئے منفی آنے پر انہیں کام کرنے کی اجازت ہوگی۔

سی پیک پر کام کرنے والے چینی انجینئرز کا یہ تیسرا کھیپ ہے جو کوویڈ 19 کے وباء کے بعد پاک وزارت خارجہ امور کی مدد سے چارٹر طیارے کے ذریعے پاکستان واپس آرہا ہے، اس سے قبل سی پیک کے عملے کے دو گروپس وبا کے دوران پاکستان پہنچے تھے ۔

پاکستان میں کوویڈ ۔19 کی بڑھتی ہوئی صورتحال کے باوجود ، سی پیک پروجیکٹس کو مکمل کرنے کے لئے چینی عملے کی آمد خوش آئند اقدام ہے، اس طرح کے مشکل وقت میں چینی عملے کی پاکستان آمد ، پاک چین دوستی کو نئی بلندیوں پر لے جائے گی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment