فلم زندگی تماشا کو ریلیز کی اجازت مل گئی

پاکستان کے ایوان بالا نے سینسر بورڈ کو فلم زندگی تماشا ریلیز کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایوان بالا نے سینسر بورڈ کو فلم زندگی تماشا کو کوروناوائرس کی پابندیاں ہٹنے کے بعد ریلیز کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

رواں سال کے آغاز میں صوبہ سندھ کے سینسر بورڈ نے پاکستانی فلمساز اور اداکار سرمد کھوسٹ کی فلم ’زندگی تماشا‘ کی ریلیز روک دی تھی، فلم کی ریلیز روکنے پر سینسر بورڈ نے موئقف اپنا تھا کی فلم کے ریلیز ہونے سے معاشرے کے مذہبی حلقوں میں بے چینی پیدا ہوگی اور ملک میں امن و امان کی صورت حال بگڑ سکتی ہے۔

تاہم آج پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ سینیٹ کی کمیٹی برائے انسانی حقوق نے اس فلم کی ریلیز کی اجازت دے دی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ ایوان بالا کی کمیٹی برائے انسانی حقوق متفقہ طور پر سینسر بورڈ کے فلم زندگی تماشا کی سکیرننگ کی اجازت دینے کے فیصلے سے اتفاق کیا ہے، ہمیں اس (فلم) میں کچھ غلط نہیں لگا۔ سینسر بورڈ کو ہماری طرف سے کرونا کے بعد اس فلم کو ریلیز کرنے کی اجازت ہے۔

فلم زندگی تماشا کو رواں سال جنوری میں ریلیز کیا جانا تھا تاہم بعض مذہبی حلقوں کی جانب سے اعتراض کے بعد فلم کی ریلیز روک دی گئی تھی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment