سپریم کورٹ نے 196 دہشتگردوں کی رہائی کا حکم معطل کر دیا

سپریم کورٹ نے 196 دہشتگردوں کی رہائی کا حکم معطل کرتے ہوئے وفاقی حکومت سے دہشتگردوں کے مقدمات کی تفصیلات طلب کرلیں۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے سماعت کرتے ہوئے 196 دہشتگردوں کی رہائی کا حکم معطل کر دیا۔ پشاور ہائی کورٹ نے 196 دہشتگردوں کی رہائی کاحکم دیا تھا، فوجی عدالتوں میں تمام دہشتگردوں کا ٹرائل ہوا تھا، عدالت نے تمام فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے وفاقی حکومت سے دہشتگردوں کے مقدمات کی تفصیلات طلب کرلیں۔

جسٹس قاضی امین نے ریمارکس دیے فوجی عدالتوں سے ٹرائل کے بعد مجرمان کو سزا ہوئی، ہر کیس کے اپنے شواہد اور حقائق ہیں، کیا مجرمان رہائی کے فیصلے کے بعد جیلوں میں ہیں؟ اٹارنی جنرل نے بتایا مجرمان جیلوں میں ہیں، عدالت ہائی کورٹ کے فیصلے کو معطل کرے، عدالت نے کیس کی سماعت جمعہ تک ملتوی کر دی۔

ملٹری کورٹس کیا ہیں؟

پشاور میں آرمی پبلک سکول حملے کے بعد وفاقی حکومت نے دہشت گردوں کے جلد ٹرائل اور ان کو سزا دلوانے کے لیے پارلیمنٹ سے 21 ویں آئینی ترمیم پاس کر کے ملک میں دو سال کے لیے فوجی عدالتوں کے قیام کا فیصلہ کیا تھا جن میں دہشت گردی میں ملوث ملزمان کے مقدمات چلے اور انہیں سزائیں دی گئیں ۔دو سال چلنے کے بعد ملٹری کورٹس نے سینکڑوں مبینہ دہشت گردوں کو پھانسی سمیت دیگر سزائیں سنائی تھیں۔ 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment