اٹلی میں غیر قانونی پاکستانیوں کو سہولیات دینے کا فیصلہ

اٹلی میں تعینات پاکستان کے سفیر جوہر سلیم کی پاکستانی اور اطالوی صحافیوں سے گفتگو میں پاکستان اور اٹلی کے درمیان تعلقات پر اظہار کیا۔

تفصیلات کے مطابق اٹلی میں تعینات پاکستان کے سفیر جوہر سلیم کی پاکستانی اور اطالوی صحافیوں سے گفتگو میں کہا کہ اٹلی 2 ٹریلین ڈالرز کی جی ڈی پی کے ساتھ دنیا کی آٹھویں اور یورپی یونین کی تیسری بڑی معیشت ہے، پاکستان کی برآمدات کرنے والے ملکوں میں اٹلی نویں نمبر پر ہے، کورونا وائرس کی وجہ سے آئی ایم ایف نے اٹلی کی مجموعی پیداوار میں 9 سے گیارہ فیصد کمی کا امکان ظاہر کیا ہے، دو طرفہ تجارتی سرگرمیوں میں گزشتہ سال پاکستان کا اٹلی کے ساتھ تجارتی خسارہ 164 ملین ڈالر رہا، جبکہ مالی سال 20-2019 میں لاک ڈاؤن کے باوجود پاکستان 210 ملین ڈالر سرپلس ہوگیا، جس میں پاکستان کی برآمدات 731 ملین ڈالر جبکہ اٹلی سے 521 ملین ڈالر کی درآمدات ہوئیں،

سفیر نے اٹلی میں موجود غیر قانونی پاکستانیوں کے لیے خوش خبری دیتے ہوئے بتایاکہ اٹلی کی حکومت نے زرعی شعبے میں کام کرنے والے اور یا گھروں میں کام کرنے والے بغیر دستاویزات کے غیر ملکی تارکین وطن کو اہم ملازمتیں اور صحت کی سہولیات دینے کا فیصلہ کیا ہے، اٹلی میں موجود ایسے پاکستانی جن کے پاس کاغذات نہیں ہیں وہ اٹلی کی اس سکیم سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں، سفیر کا مزید کہنا تھا کہ پاکستانی سفارت خانہ اپنے ہم وطنوں کی کاغذات کو مکمل کروانے میں بھرپور مدد رہا ہے، ہم. وطنوں کو سہولیات دینے کے لیے لاک ڈاؤن میں بھی پاکستانی سفارتخانہ کھلا رہا۔

انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ سال جون میں اٹلی کی طرف سے پاکستان میں ہونے والی سرمایہ کاری میں %45 اضافہ ہوا، اٹلی قابل تجدید توانائی کے شعبوں میں بھی سرمایہ کاری میں دلچسپی رکھتا ہے، گزشتہ مالی سال کے 111 ملین ڈالر کے مقابلے میں رواں مالی سال %29 کے اضافے کے ساتھ 142 اشاریہ نو ملین ڈالر ترسیلات زر رہے۔

انکا مزید کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے درمیان معاشی تعاون کے فروغ کے لئے جوائنٹ اکانومک کمیشن اور دوطرفہ سیاسی کنسلٹیشن کے قیام کیا گیا تھا، رواں سال کے آخری کوارٹر میں دونوں فورمز کی ملاقاتوں کے انعقاد کیا جائے گا، جوائنٹ اکنامک کمیشن کے تحت اٹلی سے ٹیکسٹائل ، چمڑے اور ماربل کے شعبوں میں پاکستان کو تکنیکی معاونت فراہم کرنے کا امکان ھے ۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment