لڑکی سے لڑکا بن کر شادی کرنے والا علی آکاش کورونا وائرس کا شکار

لڑکی سے لڑکا بن کر شادی کرنے والا علی آکاش کورونا وائرس کا شکار ، میڈیکل بورڈ کے سامنے پیش کیا جا سکا نہ ہی عدالت میں پیشی ہو سکی۔

 

تفصیلات کے مطابق لڑکا بن کر لڑکی سے شادی کیس کی سماعت لاہور ہائیکورٹ راولپنڈی بینچ کے جسٹس صداقت علی خان نے کی، عاصمہ بی بی عرف علی آکاش نے ایک بار پھر کونسل تبدیل کر لیا، نئے وکیل ندیم حیدر عدالت میں پیش ہوئے اور موقف اپنایا کہ پہلے علی آکاش نے وکیل کے کہنے پر بیان دیا جو درست نہیں تھا، پہلے وکیل نے مقدمہ کی پیروی سے انکار کیا ہے۔

 

عاصمہ بی بی عرف علی آکاش کے نئے وکیل نے عدالت کو علی آکاش کے کورنا میں مبتلا ہونے کا بتاتے ہوئے کورونا رپورٹ پیش کی اور کہا کہ علی آکاش بیمار ہے وہ میڈیکل بورڈ یا عدالت میں پیش نہیں ہو سکتا ، اس لیے مزید وقت دیا جائے، انھوں نے علی آکاش کو جان کا خطرہ ہونے کا موقف بھی اپناتے ہوئے راولپنڈی پولیس پر عدم اعتماد کا اظہار اور موکل کو لاہور پولیس کی سیکورٹی فراہم کرنے کی استدعا کی۔

 

عدالت نے سی پی او راولپنڈی کو 4 اگست تک علی آکاش کو سیکورٹی میں میڈیکل بورڈ کے سامنے پیش کرنے کا حکم دیا، ایڈووکیٹ جنرل مجیب الرحمٰن کیانی نے اسلامی قوانین میں عورت کی عورت سے شادی جائز نہ ہونے کا موقف اپنایا، عدالت نے کیس حل کے لئے تین آپشنز بتاتے ہوئے کہا کہ مکمل کیس ایڈیشنل سیشن جج ٹیکسلا کو بھیج دیا جائے، یا عدالت عالیہ خود کوئی جنرل آرڈر پاس کر دے یا پھر وکلاء اس پر معاونت کریں، تاہم تینوں صورتوں میں علی آکاش کا میڈیکل ٹیسٹ ہونا لازمی ہے

متعلقہ خبریں

Leave a Comment