اسلام آباد چڑیا گھر میں عملے کا جانوروں پر تشدد، ایک شیرنی ہلاک

اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد اسلام آباد کے چڑیا گھر سے جانور شفٹ کرنے کا معاملہ، عملے کی جانب سے جانوروں کو بےدردی سے دوسری جگہ منتقل کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد مختلف جانوروں کو اسلام آباد چڑیا گھر سے لاہور چڑیا گھر میں منتقل کیا گیا، جانور منتقلی کے دوران چڑیا گھر کے عملے نے جانوروں پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑ دئیے۔

ذرائع کے مطابق اسلام آباد کے مرغزار چڑیا گھر میں شیر اور شیرنی کو منتقلی کے دوران تشدد کا نشانہ بنایا گیا، تشدد کے بعد شیرنی لاہور پہنچتے ہی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے مر گئی، شیر کو پنجرے سے باہر نکالنے کے لیئے ڈنڈوں کا استعمال کیا گیا ، پنجرے میں آگ بھی لگائی گئی ، شیر کو زخمی حالت میں لاہور کے چڑیا گھر منتقل گیا۔

ذرائع نے بتایا کہ چڑیا گھر کی انتظامیہ کی جانب سے جانوروں پر تشدد کے معاملے کو دبایا گیا، دو دن گزرنے کے بعد بھی تشدد کے واقعہ میں ملوث اہلکاروں کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا گیااسلام آباد کے چڑیا گھر میں موجود ہاتھی کاون کا پاسپورٹ بن گیا لیکن ابھی تک ہاتھی کو کمبوڈیا میں موجود قدرتی جنگل میں منتقل نہیں کیا جا سکا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment