ادارہ شماریات نے ماہانہ مہنگائی کی رپورٹ جاری کردی

مالی سال کے پہلے ہی ماہ مہنگائی بڑھنا شروع ہوگئی جولائی میں مہنگائی کی شرح 9 اعشاریہ تین فیصد تک پہنچ گئی۔
 
ادارہ شماریات نے ماہانہ مہنگائی کی رپورٹ جاری کردی ہے، مالی سال کے پہلے مہینے سے ہی مہنگائی آسمان سے باتیں کررہی ہے۔ جولائی میں مہنگائی کی شرح9.3 فیصد تک پہنچ گئی ہے، جون کے مقابلے میں جولائی کے دوران مہنگائی میں 2.50 فیصد اضافہ ہوا۔

ادارہ شماریات کے مطابق جولائی میں ٹماٹر 179 فیصد اور موٹر فیول 27 فیصد مہنگا ہوا سبزیاں 23.8 فیصد اور پیاز 16.6 فیصد مہنگے ہوئے، اس دوران انڈے 10.8، مسالحہ جات 7.5 فیصد، گندم  7.4 اور آلو 4.5 فیصد، گوشت 3.9، چینی 3.8 فیصد اور لوبیا 3 فیصد مہنگی ہو گیا۔

جولائی 2019 سے جولائی 2020 تک ٹماٹر 100 فیصد مہنگے ہوئے اس دوران آلو 62.9 فیصد، دال مونگ 46.2 فیصد، انڈے 43 فیصد، مسالحہ جات 39 فیصد، چکن 36 فیصد اور دال ماش 35.8 فیصد مہنگی ہوئی۔ ایک سال میں لوبیا 34 فیصد,  گندم 28.5 فیصد اور دال مسور 23.7 فیصد مہنگی ہوئی، اس دوران آٹا 18.5 فیصد، سبزیاں 17 فیصد اور گھی 22 فیصد  مہنگا ہوا ایک سال میں کوکنگ آئل 17 فیصد,  چینی 16.98 فیصد مہنگی ہوگئی۔

مارچ 2020 کے بعد جولائی مہنگا ترین مہینہ ثابت ہوا ہے . جون 2020 میں مہنگائی کی شرح 8.6 فیصد تھی جولائی 2019 میں مہنگائی کی شرح 8.4 فیصد تھی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment