بلوچستان اور سندھ میں طوفانی بارشوں نے تباہی مچا دی

بلوچستان میں طوفانی بارشوں نےتباہی مچادی، سیلابی ریلوں میں بہہ کردوافرادجاں بحق ہوگئے۔ سبی میں پانچ افراد سیلابی ریلےمیں لاپتہ ہوگئے، اندرون سندھ میں بھی سیلابی ریلوں کےباعث درجنوں دیہات زیرآب آ گئے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ اور بلوچستان میں بارشوں اور سیلاب نے تباہی مچادی، دادو کی تحصیل جوہی کےندی نالوں میں طغیانی، پچاس کے قریب گاؤں سیلابی ریلے کی لپیٹ میں آگئے، لوگوں نے درختوں پر چڑھ کر جانیں بچائیں، سیلابی ریلوں سے نئی گج ڈیم کو بھی نقصان پہنچا، آئی ایس پی آر کے مطابق سیلاب سے ڈیم کا بند ٹوٹ گیا،پاک فوج کی ٹیمیں امدادی کارروائیوں کیلئےپہنچ گئیں۔

چوہڑجمالی میں موسلادھار بارشوں سےمواصلاتی نظام درہم برہم ہوگیا، سجاول میں نشیبی علاقے زیر آب آگئے، سیہون میں بھی بارشوں نے تباہی مچادی،سیلابی ریلے میں ڈوب کر دو افراد جاں بحق ہوگئے۔نواحی علاقے جھانگارا کا زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔

بلوچستان کے ضلع کوہلو میں موسلادھار بارشوں سے کالا بوہہ کے مقام پر سیلابی ریلے میں پک اپ بہہ گئی،جبکہ متعدد گاڑیاں بھی پھنس گئیں۔ڈیرہ بگٹی کےنواحی علاقےمیں بارش کے پانی میں ڈوب کر 2 نوجوان جاں بحق ہوگئے۔

سبی میں طوفانی بارشوں سے صورتحال مزید سنگین ہوگئی،کچھی کے علاقہ کرتہ میں سیلابی پانی داخل ہوگیا، ضلع کچھی کا کرتہ سے زمینی رابطہ بھی منقطع ہوگیا۔ کرتہ میں ایک ہی خاندان کے 5افراد سیلابی پانی میں بہہ گئے۔ لاپتہ افراد میں 2خواتین شامل ہیں۔دوسری جانب دریائےبولان میں اونچےدرجےکا سیلاب ہے، جہاں 85ہزار کیوسک کا ریلا گزر رہا ہے،تلی ندی میں 27 ہزار کیوسک کا سیلابی ریلا گزر رہا ہے،دریائے ناڑی میں نچلے درجےکا سیلاب ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment