میری گاڑی پر پتھراؤ کرنے والے پولیس وردی میں تھے:مریم نواز

قومی احتساب بیورو (نیب) کے دفتر کے باہر ہونے والی ہنگامہ آرائی کے بعد مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز شریف نے الزام لگایا ہے کہ ان کی گاڑی پر پتھراؤ کرنے والے پولیس کی وردی میں تھے اور اگر وہ بلٹ پروف گاڑی میں نہ ہوتیں تو نہ جانے کتنا نقصان پہنچتا۔

مسلم لیگ کی رہنما مریم نواز کو منگل کو نیب لاہور نے رائیونڈ اراضی کیس کے حوالے سے پیشی کے لیے بلایا تھا تاہم ان کے وہاں پہنچنے سے قبل ن لیگ کے کارکنوں اور پولیس اہلکاروں کے درمیان تصادم ہوا جس کے دوران پتھر بھی برسائے گئے اور پولیس کی جانب سے آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج بھی کیا گیا۔

اگرچہ نیب نے ہنگامہ آرائی کے بعد مریم نواز کی پیشی مؤخر کر دی تھی البتہ وہ تصادم کے بعد بھی کافی دیر نیب کے دفتر کے باہر موجود رہیں۔ ان کا مؤقف تھا کہ اگر انھیں بلایا گیا ہے تو ان کا مؤقف سنا بھی جائے۔

دوسری طرف پنجاب کے وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا ہے کہ نیب کے دفتر اور پولیس پر نواز لیگ کے کارکنوں کی جانب سے پتھراؤ کیا گیا اور جعلی نمبر پلیٹ والی گاڑیوں میں پتھر لائے گئے۔

ان کا کہنا تھا کہ چار پولیس اہلکار واقعے میں زخمی ہوئے ہیں اور بتایا کہ انھیں نقصان پہنچانے والوں کے خلاف سخت کارروائی ہوگی۔

وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے بھی واقعے کا نوٹس لے لیا ہے اور چیف سیکریٹری پنجاب اور انسپیکٹر جنرل پولیس سے رپورٹ طلب کرتے ہوئے ذمہ داروں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کا حکم دیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment