شیریں مزاری وزارتِ خارجہ پر برس پڑیں

وفاقی وزیر انسانی حقوق اور حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف کی رکن قومی اسمبلی شیریں مزاری نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کا مقبوضہ کشمیر سے متعلق نیا بیانیہ پوری دنیا نے تسلیم کیا لیکن ھمارے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے وزیراعظم عمران خان کا پیغام اس طاقت کے ساتھ دنیا کے سامنے پیش نہیں کیا جس طرح اسے کرنا چاہیے تھا۔

اسلام آباد میں منعقد ‘یوتھ فورم فار کشمیر’ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر شیریں مزاری نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی انتہاپسندی کی پالیسی کو نازی ازم کے ساتھ ملایا، جسے پوری دنیا نے اور انٹرنیشنل میڈیا میں سراہا گیا۔

‌شیریں مزاری نے کہا کہ ہم سفارتی کاری کے پرانے طریقوں پر انحصار کر رہے ہیں، امریکی صدر ساری ڈپلومیسی ٹوئٹر پر کر رہا ہے، لیکن ہمارے وزرا اپنے پرتعیش ہوٹل سے باہر نہیں جاتے، اپنے کپڑوں پر بل نہیں پڑنے دیتے۔

شیریں مزاری نے کہا کہ ہم نے کشمیریوں کو مایوس کیا، ہم نے اپنے وزیراعظم عمران خان کو مایوس کیا۔

انہوں نے کہا کہ ھماری وزارت خارجہ نازی ازم اور ہندتوا کے تعلق کو ہی بتا دیتے کہ یہ دنوں کس طرح ایک ہیں تو بہت ساری چیزیں واضح ہوجاتیں۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ ہماری وزارت نے ڈیجیٹل فلم سیریز کا سلسلہ شروع کیا جس میں پہلی فلم فراڈ دکھائی گئی جو کہ کشمیر کے موضوع پر تھی اور پہلی مرتبہ اور پہلے دن ہمارے فیس بک پیج پر صارفین کی تعداد 5 لاکھ تھی۔

شیریں مزاری نے سوال اٹھایا کہ کوئی ایک حوالہ دیں جب ہمارے سفارتکاروں نے بین الاقوامی فورمز میں مسئلہ کشمیر پر اقوام متحدہ کی اکتوبر 2000 کی جنگ زدہ علاقوں میں خواتین کے تحفظ سے متعلق قرارداد کا تذکرہ کیا ہو۔ 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment