توشہ خانہ ریفرنس: سابق صدر زرداری پر فرد جرم کیلئے 9 ستمبر کی تاریخ مقرر

اسلام آباد کی احتساب عدالت میں سابق صدر اور پیپلز پارٹی کے رہنما آصف زرداری توشہ خانہ ریفرنس میں ذاتی حیثیت میں عدالت میں پیش ہوگئے، عدالت نے فرد جرم کے لیے 9 ستمبر کی تاریخ مقرر کردی۔

احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس میں آصف زرداری کو ذاتی حیثیت میں طلب کیا تھا جس کے لیے وہ اسلام آباد پہنچے۔

سابق صدر آصف زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ آصف علی زرداری بیمار ہیں، عدالت لوگوں سے بھری ہوئی ہے اگر ان کو کورونا ہوگیا تو کون ذمہ دار ہے؟ پہلے عدالت یہ فیصلہ کرے کہ کیا وکلا بغیر رکاوٹ عدالت میں پیش ہو سکتے ہیں؟

عدالت میں حاضری کے موقع پر سابق صدر بطور ملزم روسٹرم پر آئے اور ان کی عدالت میں حاضری لگائی گئی۔

بعد ازاں عدالت نے آصف زرداری پر فرد جرم کے لیے 9 ستمبر کی تاریخ مقرر کرتے ہوئے انہیں آئندہ سماعت پر پیش ہونے کا حکم دیا جب کہ عدالت نے تمام ملزمان کو ریفرنس کی نقول فراہم کرنے کا بھی حکم دیا۔

عدالت نے پیپلز پارٹی کے دیگر رہنماؤں یوسف رضا گیلانی، عبدالغنی مجید اور انور مجید کو بھی 9 ستمبر کو طلب کرلیا جب کہ ملزمان کو حاضری یقینی بنانے کیلئے 20-20 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے بھی عدالت میں داخل کرانے کا حکم دیا ہے۔

عدالت نے نوازشریف کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی 25 اگست تک روکے ہوئے نواز شریف کی حد تک آج کی سماعت ملتوی کرنے کی درخواست منظور کرلی۔ نواز شریف کو اشتہاری قرار دینے یا ٹرائل میں شامل کر کے فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ 25 اگست کو ہوگا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment