پاکستان میں کورونا وائرس کے بعد کوہ پیمائی کی سرگرمیاں بحال

کورونا وائرس میں کمی کے ساتھ ساتھ کوہ پیمائی کی سرگرمیاں پاکستان میں تیز ہو گئیں۔ چیک ری پبلک کا تین رکنی کوہ پیماؤں کا گروپ پاکستان ہنزہ پہنچ گیا ہے۔ کوہ پیما دنیا کی مشکل چوٹی موچوچش ، جسے آج تک کوئی سر نہیں کر سکا،  پر جائیں گے۔

پاکستان کی خوبصورت بلند و بالا خطرناک چوٹیاں ہمیشہ ہی دنیا بھر کے سیاحوں اور کوہ پیماؤں کی توجہ کا خصوصی مرکز رہی ہیں۔ پاکستان کی یہ خوبصورت چوٹیاں کورونا وبا کے باعث کوہ پیماؤں کی پہنچ سے دور ہو گئی تھیں تاہم کورونا میں کمی کے بعد پاکستان کے خوبصورت سیاحتی مقامات اور بلند بالا چوٹیاں پھر سے توجہ حاصل کر رہی ہیں۔

کورونا میں کمی ہوتے ہی چیک ری پبلک کے تین کوہ پیماؤں کا گروپ پاکستان ہنزہ پہنچا ہے، جہاں سے تینوں کوہ پیما 7453 فٹ بلند چوٹی موچوچش سر کریں گے۔ کوہ پیماؤں میں پاویل کورینیک،پاویل بیم، اور جری جینک شامل ہیں۔ کوہ پیماؤں نے پاکستان میں کوہ پیمائی کی سرگرمیاں بحال ہونے پر خوشی کا اظہار کیا اور حکومت پاکستان کا شکریہ بھی ادا کیا۔

سیکرٹری الپائن کرار حیدری نے کہا کہ تینوں کوہ پیما موچوچش کی اس خطرناک چوٹی پر جا رہے ہیں، جسے آج تک کوئی سر نہیں کر سکا، کیونکہ اس چوٹی پر برفانی تودوں کے خطرات زیادہ ہوتے ہیں۔ تاہم پاکستان میں مشکل صورتحال کے باوجود کوہ پیماؤں کا آنا خوش آئند ہے۔

 

 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment