ایف بی آر نے 4.36 ارب روپے کی ٹیکس چوری پکڑ لی

ایف بی آر فیلڈ دفتر نے 4.36 ارب روپے کی ٹیکس چوری پکڑ لی

فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی ہدایات کے تحت تمام فیلڈ دفاتر ٹیکس چوری اور ٹیکس فراڈ کے سد باب کے لئے سر گرم ہیں اور آپریشنز جاری رکھے ہوئے ہیں۔ اس سلسلے میں ڈائیریکٹر انٹیلی جنس اینڈ انوسٹی گیشن آئی آر لاہور نے کھانے کی اشیاء بنانے والے مینو فیکچرنگ یونٹ میں چھاپہ مار کر ٹیکس چوری اور ٹیکس فراڈ کا کیس پکڑ لیا ہے۔

لاہور میں واقع رجسٹرڈ مینو فیکچرنگ یونٹ کے ریکارڈ کی جانچ پڑ تال کے بعد معلوم ہو ا کہ رجسٹرڈ یونٹ نے ٹیکس فراڈ کرکے اپنی اصل پیداوار اور فروخت کو چھپایا اور 4.36 ارب روپے کا واجب الادا سیلز ٹیکس چوری کیا۔

سیلز ٹیکس ایکٹ 1990 کے سیکشن (37)2 کے تحت مینو فیکچرنگ یونٹ پر نہ صرف 4.36 ارب روپے سیلز ٹیکس کی مد میں واجب الادا ہیں بلکہ 2.45 ارب روپے کا ڈیفالٹ سرچارج اور 4.36 ارب روپے کا جرمانہ بھی واجب الادا ہے۔ واجب الادا سیلز ٹیکس کی ریکوری کے لئے کیس فیلڈ دفتر کو بھجوا دیا گیا ہے۔

ڈایریکٹوریٹ آف انٹیلی جنس اینڈ انوسٹی گیشن نے ٹیکس چوری اور ٹیکس فراڈ کی روک تھام اور ریکوری کے لئے آپریشنز تیز کر دیئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment