گندم کے بعد چینی کا بحران سر اٹھانے لگ گیا

گندم کے بعد چینی کا بحران سر اٹھانے لگ گیا ہے۔ اقتصادی رابطہ کمیٹی کو بتایا گیا ہے کہ ملک میں چینی کے ذخائر صرف ڈھائی ماہ کے رہ گئے ہیں۔

مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔  ای سی سی کو بتایا گیا کہ چینی کے ذخائر تیزی سے گررہے ہیں اور ملک میں چینی کے ذخائر 12 لاکھ میٹرک ٹن رہ گئے۔ چینی کے زخائر نومبر کے اوائل میں ختم ہونے سے ملک میں چینی کے ذخائر صرف ڈھائی ماہ کے رہ گئے ہیں۔

 ای سی سی نے نجی شعبے کے زریعے چینی درآمد کرنے کی اجازت دے دیچینی کی درآمد پر ٹیکسز اور ڈیوٹیز میں کمی کی منظوری دے دی گئی ہے۔

ای سی سی نے ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان کو دو لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے کی ہدایت کردی ہے۔ نجی شعبہ بھی پانچ لاکھ ٹن گندم درآمد کررہا ہے، درآمدی گندم کا پہلا جہاز 26 اگست کو پاکستان پہنچے گا۔ سات لاکھ ٹن گندم کی درآمد سے قلت پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔ ملک میں گندم کے 26 ملین ٹن ذخائر موجود ہیں۔

وفاقی وزیرصنعت و پیداوار حماد اظہر کا کہنا ہے کہ چینی کی درآمد پر سیلز ٹیکس 17 فیصد سے کم کرکے ایک فیصد، ویلیو ایڈڈ ٹیکس 3 سے صفر اور ود ہولڈنگ ٹیکس 5.5 سے کم کرکے 0.25 فیصد مقرر کردیا گیا ہے۔ ٹیکسزمیں کمی محدود مدت اورچینی کی درآمد کی مخصوص مقدار کیلئے ہوگی،ٹی سی پی کو ایک ہفتے میں ٹینڈرز اور دیگر اقدامات کی ہدایت کردی گئی۔

ای سی سی نے پاک افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کے کراچی پورٹ پر پھنسے ہوئے کنٹینرز کا معاملہ وزارت میری ٹائم افیئرز کو اٹھانے کی ہدایت کردی۔ ای سی سی نے جے جے وی ایل پلانٹ سے ایل پی جی کی پیداوار بحال کرنے کی اصولی منظوری دے دی۔

 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment