کراچی میں شدید بارشیں، پاک فوج کا ریسکیو آپریشن جاری

ملک کے بڑے شہر کراچی میں مون سون کے تازہ سپیل سے طوفانی بارش کا سلسلہ جاری ہے اور اس کے نتیجے میں شہر کا بڑا حصہ متاثر ہوا ہے۔

محکمۂ موسمیات کے مطابق کراچی میں موسلادھار بارش کا تازہ سلسلہ جمعرات کی صبح شروع ہوا ہے اور بارش شام گئے تک جاری رہ سکتا ہے۔

شہر کے متعدد علاقوں میں منگل کو ہونے والی شدید بارش کے بعد اب تک بحالی کا کام نہیں ہو سکا تھا اور بارش کے نئے سلسلے نے شہریوں کی مشکلات میں مزید اضافہ کر دیا ہے۔

محکمۂ موسمیات کراچی کے مطابق 27 اگست کی صبح سے دوپہر تک ائیر فورس بیس فیصل اور ناظم آباد کے علاقوں میں 100 ملی میٹر سے زیادہ بارش ہوئی ہے جبکہ ائیر فورس بیس مسرور کے علاقے میں 98 اور ایئرپورٹ اور اس کے گردونواح میں 80 ملی میٹر تک بارش ہوئی ہے۔

گذشتہ ہفتے کے دوران پچھلی بارش سے شدید متاثرہ سرجانی ٹاؤن میں بھی جمعرات کو 73 ملی میٹر بارش ہو چکی ہے۔

محکمۂ موسمیات کراچی کے مطابق ائیر فورس بیس فیصل کے علاقے میں اگست کے مہینے میں بارش کا ایک اور نیا ریکارڈ قائم ہو گیا ہے اور وہاں 27 اگست کی دوپہر تک کل 485 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔

کراچی میں محکمۂ موسمیات کے چیف میٹرولوجسٹ سردار سرفراز نے صحافیوں کو بتایا کہ آج شام چار بجے تک توقع ہے کہ موسلادھار بارش کا سلسلہ کچھ کم ہو جائے گا مگر ہلکی بارش کا سلسلہ رات گئے تک جاری رہنے کا امکان ہے۔ ان کے مطابق جمعے کو بھی بارشوں کا سلسلہ جاری رہ سکتا ہے مگر اس کی شدت پہلے سے کم ہو گی۔

محکمہ موسمیات کے حکام کے مطابق اس بارش کی وجہ بحیرۂ عرب میں بارشوں کے سسٹم کی موجودگی ہے جسے بلوچستان سے آنے والے ہوا کے کم دباؤ نے تقویت بخشی ہے۔

سردار سرفراز کا یہ بھی کہنا ہے کہ بارش کا تازہ سسٹم کمزور ہو رہا تھا مگر بلوچستان سے ایک نیا سلسلہ شروع ہو رہا ہے۔ اس کے ساتھ مل کر بارشوں کا ایک نیا سلسلہ 29 یا 30 اگست کو پھر آ سکتا ہے جس میں کچھ علاقوں میں تیز اور کچھ میں ہلکی بارش متوقع ہے۔

کراچی پولیس ترجمان کے مطابق شہر میں بارش کی وجہ سے تقریباً تمام بڑی شاہراہیں بند ہیں جبکہ تقریباً کلفٹن، پنجاب چورنگی، کے پی ٹی، مہران، ناظم آباد، لیاقت آباد اور ڈرگ روڈ سمیت تقریباً تمام ہی انڈر پاسز میں پانی بھر چکے ہیں اور کسی بھی ممکنہ ناگہانی صورتحال سے بچنے کے لیے ان انڈر پاسز کو بند کر دیا گیا ہے۔

حالیہ بارشوں کے بعد کراچی میں پاک فوج، رینجرز اور پاک بحریہ کا ریلیف اور ریسکیو آپریشن جاری ہے۔ پاک آرمی کی انجینئر کور کے جوان ملیر ندی سے نکلنے والے پانی کو روکنے کیلئے کوشاں ہیں۔

پاک افواج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق کراچی میں بارش سے متاثرہ علاقوں میں شہریوں کی مدد کے لیے پاک فوج اور رینجرز کی 70 امدادی ٹیمیں امدادی سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔ ریسکیو ٹیمیں متاثرین کو محفوظ مقامات پر منتقل کر رہی ہیں جب کہ سیلابی پانی میں پھنسے افراد کو تیار کھانا بھی فراہم کیا جارہا ہے۔

 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment