جنوبی وزیرستان: باردوی سرنگ پھٹنے سے 4 بچے زخمی

جنوبی وزیرستان: تیارزہ اور وانا کے سرحدی علاقے خڑ پل کے قریب بارودی سرنگ کا دھماکے سے 4 بچے زخمی ہو گئے۔

ذرائع کے مطابق بارودی سرنگ کے دھماکے میں زخمی ہونے والے بچوں میں سات سالہ راحیلہ بی بی ، آٹھ سالہ شکیلہ بی بی ، 12 سالہ ضیاء اللہ جبکہ پانچ سالہ مینہ بی بی شامل ہیں۔

 زخمی ہونے والے بچوں کا تعلق احمد زئی قبیلے سے ہے، تمام زخمی بچوں کو ہیڈکوارٹر ہسپتال وانا منتقل کر دیا گیا ہے۔

بارودی سرنگوں کو انتہائی مہلک ہتھیار مانا جاتا ہے، کیونکہ زمین تلے بچھا یہ بارود پھٹ جائے تو عمر بھر کے لیے جسمانی معذوری متاثرہ افراد کا مقدر بن جاتی ہے۔

اس حوالے سے  انسانی حقوق کے تحفظ  کے لیے کام کرنے والے سرگرم کارکنان مطالبات کرتے رہے ہیں کہ یہ بارودی سرنگیں سیکورٹی فورسز اور عسکریت پسندوں نے بچھائی تھیں۔ پاکستانی فوج کی جانب سے عسکریت پسندوں کے خلاف شروع کیے گئے فوجی آپریشن ‘ضرب عضب’ مکمل ہو جانے کے بعد ان بارودی سرنگوں کو ناکارہ نہیں بنایا گیا۔ لہذٰا، اب یہ بارودی سرنگیں مقامی آبادیوں کے لیے سنگین خطرہ بنتی جا رہی ہیں۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment