معروف سرائیکی گلوکار شفاء اللہ خان انتقال کر گئے

میانوالی: معروف سرائیکی گلوکار شفاء اللہ خان روکھڑی حرکت قلب بند ہونے سے انتقال کر گئے۔

فیملی ذرائع کے مطابق طبیعت زیادہ خراب ہونے پر انہیں اسلام آباد اسپتال لایا گیا مگر وہ جانبر نہ ہو سکے اور خالق حقیقی سے جا ملے۔

مرحوم سرائیکی گلوکار شفاءاللہ خان روکھڑی نیازی کا تعلق نیازی قبیلہ سے تھا اور وہ متوسط گھرانے سے تعلق رکھتے تھے۔

گلوکاری کے شعبہ میں قدم رکھنے سے قبل شفاءاللہ خان روکھڑی پنجاب پولیس میں ملازمت کرتے تھے۔ 

گلوکاری کے شوق کو پورا کرنے کے لیے انہوں نے پولیس کی ملازمت کو خیرباد کہہ کر باقاعدہ طور پر گلوکاری کے میدان میں قدم رکھ دیا۔ شفااللہ روکھڑی دس سال تک گلوکاری میں محنت کرتے رہے اور 1995 میں اپنا پہلا البم ریلیز کیا جو انہیں کامیابی کی بلندیوں تک لے گیا۔

شفاءاللہ خان روکھڑی اور ان کے صاحبزادے ذیشان خان روکھڑی نے موسیقی میں اپنا نام پیدا کیا اور سوشل میڈیا پر ان کے سبکرائیبرز کی تعداد لاکھوں میں ہے۔

گلوکار شفا اللہ خان روکھڑی کے مشہور گیتوں میں سے بہت سے گیت ہیں تاہم "اج کالا جوڑا پا ساڈی فرمائش تے” سے انہیں ملک گیر شہرت حاصل ہوئی۔ ان کے میوزک البمز میں ڈھولا،پردیسی ڈھولا، گلہ تیرا کریے اور دیگر شامل ہیں

ان کی میت اسلام آباد سے واپس  میانوالی کے لیے روانہ کر دی گئی ہے۔ شفاءاللہ خان روکھڑی کی نماز جنازہ اور تدفین میانوالی میں ان کے آبائی علاقہ روکھڑی میں کی جائے گی۔

 

    

متعلقہ خبریں

Leave a Comment