سپریم کورٹ:کرپشن میں ملوث دو سرکاری افسران کو جبری ریٹائرڈ کرنے کا حکم کالعدم

سپریم کورٹ نے کرپشن میں ملوث دو سرکاری افسران کو جبری ریٹائرڈ کرنے کا حکم کالعدم قرار دے دیا۔

چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔ عدالت نے دونوں سرکاری افسران ڈاکٹر مسل خان اور نزیر حسین کی نوکری سے برطرفی کا فیصلہ بحال کردیا ہے۔ عدالت نے دونوں سے کرپشن کی رقم ریکور کرنے کا حکم بھی دے دیا ہے۔

چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ ڈاکٹر مسل خان نے ایک کروڑ 80 لاکھ روپے کی خورد برد کی۔ اسٹور کیپر نزیر حسین نے ایک کروڑ 74 لاکھ کی خوردبرد کی،کیا ڈی آئی خان ان دونوں کی ذاتی جاگیر تھی۔

چیف جسٹس بولے کہ میڈیسن اور میڈیکل آلات کی خریداری میں خوردبرد کی گئی۔ ہسپتال کا پیسہ اٹھا کر بانٹ دیا۔ محکمہ صحت نے دونوں کو نوکری سے برطرف اور کرپشن کی رقم ریکور کرنے کا حکم دیا تھا۔ سروس ٹریبونل نے دونوں سابق سرکاری افسران کو جبری ریٹائرڈ کرنے کا حکم دیا تھا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment