نواز شریف کی عدالت کو جلد پاکستان واپسی کی یقین دہانی

نواز شریف نے اسلام آباد ہائی کورٹ کو صحت یابی کے فوری بعد پاکستان واپسی کی یقین دہانی کرا دی۔

سابق وزیراعظم اور پاکستان مسلم لیگ ن کے سربراہ نواز شریف نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست جمع کروائی۔درخواست میں سابق وزیراعظم نے موقف اختیار کیا کہ کورونا وباء کے باعث لندن میں علاج تاخیر کا شکار ہوا، ڈاکٹرز نے تاحال پاکستان سفر کی اجازت نہیں دی۔ ڈاکٹرز نے صحت یابی کے بعد اجازت دی تو پہلی فلائیٹ سے پاکستان آؤں گا۔ 

درخواست میں نوازشریف نے کہا کہ پنجاب حکومت کو ضمانت میں توسیع کے لیے میڈیکل رپورٹ سمیت تمام دستاویزات فراہم کیں۔ پنجاب حکومت نے اپنے مذموم مقاصد کےلیے طے شدہ منصوبے کے تحت ضمانت میں توسیع کی درخواست مسترد کی۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ وکیل نے مشورہ دیا کہ عدالت میں خود پیش ہوئے بغیر فیصلہ چیلنج کرنے کا کوئی فائدہ نہ ہو گا۔ پاکستان واپس نہ آنے کے باعث پنجاب حکومت کا ضمانت میں توسیع کا فیصلہ چیلنج نہیں کر سکا۔ تازہ ترین میڈیکل رپورٹ بھی بھجوا دی ہے جو وکیل کو موصول ہوتے ہی ریکارڈ پر لائی جائے گی۔

نواز شریف کی حاضری سے استثنا کی درخواست کے ساتھ 26 جون کی میڈیکل رپورٹ بھی عدالت میں جمع کرائی گئی۔خواجہ حارث اور منور اقبال دگل ایڈووکیٹ کے ذریعے حاضری سے استثنی کی درخواست کے ساتھ متعلقہ دستاویزات جمع کرائی گئیں۔ 

نواز شریف نے استدعا کی ہے کہ صحتیابی کے بعد وطن واپسی تک اپیل پر سماعت ملتوی کی جائے یا نامزد نمائندے کے ذریعے سماعت کی جائے۔ 

متعلقہ خبریں

Leave a Comment