احتساب عدالت:انڈونیشیا میں سفارتخانہ کی عمارت غیر قانونی طور بیچی گئی، ملزمان کو نوٹس جاری

اسلام آباد احتساب عدالت نے انڈونیشیا میں پاکستانی سفارت خانہ کی عمارت غیرقانونی طور پر فروخت کرنے کا ریفرنس پر سماعت کی۔ عدالت نے انڈونیشیا میں سابق سفیر سید مصطفی انور حسین سمیت تمام ملزمان کو طلبی کے نوٹس جاری کر دیئے اور تمام ملزمان کو آئندہ سماعت پر حاضری یقینی بنانے کا حکم دیدیا-

اسلام آباد احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے عدالت انڈونیشیا میں پاکستانی سفارت خانہ کی عمارت غیرقانونی طور پر فروخت کرنے کا ریفرنس پر سماعت کی-ریفرنس میں کہا گیا کہ مصطفی انور حسین نے جکارتہ میں سفارتخانے کی عمارت غیر قانونی طور پر فروخت کی اور وزارت سے منظوری لئے بغیر عمارت فروخت کا اشتہار جاری کیا اوریہ آرڈیننس کی سیکشن نائن اے کے تحت اختیارات کے غلط استعمال کے مرتکب ہوئے ہیں-

انہوں نے مزید بتایا کہ ملزم نےجکارتہ میں تعیناتی کے فوری بعد عمارت فروخت کرنے کا عمل شروع کیا اور یہ عمل وزارت خارجہ سے بھی چھپائے رکھا ،اور قومی خزانے کوبھی 1.32 ملین ڈالر کانقصان پہنچایا ہے-

ملزم نے بدنیتی سے بعد میں وزارت کو عمارت فروخت کرنے کا پروپوزل بھیجا جبکہ وزارت کی جانب سے کئی خطوط میں منظوری کے بغیر عمارت فروخت سے منع کیا گیا-

 عدالت نے انڈونیشیا میں سابق سفیر سید صطفی انور حسین سمیت تمام ملزمان کو طلبی کے نوٹس جاری کر دئے اور تمام ملزمان کو آئندہ سماعت پر حاضری کا حکم دیدیا-اور سماعت 17 ستمبر تک ملتوی کر دی گئی-

متعلقہ خبریں

Leave a Comment