بیوٹی پارلرز کے خلاف ایف بی آر کا شکنجہ تیار

ایف بی آر نے بیوٹی پارلرز کے گرد گھیرا تنگ کرنے کا اعلان کردیا۔بیوٹی پارلرز، مساج سنٹرز، بیوٹی کلینکس اور سلمنگ کلبز پر پوائنٹ آف سیلز لگانے کی ہدایات جاری کردی گئیں۔ 

ایف بی آر نے کہا کہ بیوٹی پارلرز، مساج سنٹرز، بیوٹی کلینکس اور سلمنگ کلبز کا کاروبار ملک بھر میں پھیل رہا ہے جہاں سجنے سنورنے اور اسمارٹ ہونے کے لیے رش بڑھتا جا رہا ہے اور صارفین سے ہزاروں روپے فیس لی جاتی ہے مگر ٹیکس ادا نہیں کیا جاتا۔

ایف بی آر نے بیوٹی پارلرز پر پوائنٹ آف سیلز لگانے کی ہدایت جاری کردی ہیں۔ مساج سنٹرز، پلاسٹک سرجری کلینکس، کاسمٹیکس سنٹرز اور بیوٹی کلبز کے علاوہ سلمنگ کلبز پر پوائنٹ آف سیلز لگائے جائیں گے۔ ملک کے آٹھ بڑے شہروں میں قائم ان سنٹرز کو پوائنٹ آف سیلز لگانا لازمی ہوگی۔ پو او ایس کے ذریعے ان سنٹرز کی سیلز کو مانیٹر کیا جائے گا۔  خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

ایف بی آر کا کہنا ہے چھوٹے بیوٹی پارلرز کی رجسٹریشن نہیں کی جائے گی۔ ایک ہزار اسکوائر فٹ سے کم کے پارلرز اور کلینکس کے علاوہ بغیر اے سی والے پارلرز اور کلبز کو پوائنٹ آف سیلز لگانے سے چھوٹ حاصل ہوگی۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment